عامر کو پرفارمنس پر ٹیم میں شامل کیا ، عرفان کو آرام کی ضرورت تھی ؛ ہارون الرشید

عامر کو پرفارمنس پر ٹیم میں شامل کیا ، عرفان کو آرام کی ضرورت تھی ؛ ہارون ...

  

لاہور(آئی این پی)پاکستان کر کٹ بورڈ (پی سی بی ) کی سلیکشن کمیٹی کے چےئر مین ہارون الرشید نے کہا ہے کہ محمد عامر کی فارم و فٹنس پر ان کی ٹیم میں جگہ بنتی تھی ، آصف اور سلمان بٹ ڈومیسٹک کرکٹ کی پرفارمنس پر دوبارہ قومی ٹیم میں واپس آ سکتے ہیں، بورڈ کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں کررہا ، دورہ نیوزی لینڈ میں منتخب نہ ہونیوالے کھلاڑیوں کو مایوس نہیں ہونا چاہیے،محمد عرفان کو ٹیم سے ڈراپ نہیں کیا انہیں تھوڑا آرام دیا گیا ، محمد عرفان ٹیم کامستقل حصہ ہیں ،اس وقت پاکستان کو دستیاب فاسٹ بالرز میں محمد عامر سے اچھا بالر کوئی نہیں ، نیوزی لینڈ ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے کی خطرناک ٹیم ہے جس کو دیکھتے ہوئے ٹیم منتخب کی ، اور کیمپ میں کوچز نے بہت محنت کی ہے ، یاسر شاہ کے بعد ہمارے پاس کوئی اچھا سپنر موجود نہیں ، انٹرنیشنل لیول پر ہر کرکٹر کو بہت سی ذمہ داریوں کا خود احساس کرنا چاہئے، عوام جتنی جلدی آپ کو ہیرو مانتی ہے اس سے بھی کم وقت میں آپ ولن بن سکتے ہیں ۔ اپنے ایک انٹرویو میں چیف سلیکٹر ہارون الرشید نے کہا کہ پی سی بی نے ہمیں محمد عامر کے بارے میں ہی گرین سگنل دیا تھا، عامر کی فارم و فٹنس پر ان کی ٹیم میں جگہ بنتی ہے ، آصف اور سلمان بٹ کے حوالے سے بورڈ جب گرین سگنل دے گا اور دونوں کھلاڑی ڈومیسٹک کرکٹ کی پرفارمنس پر دوبارہ قومی ٹیم میں واپس آجائیں گے، بورڈ کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں کررہا ، محمد عامر کی انٹرنیشنل کرکٹ میں واپسی سے کرکٹ کو فائدہ ہوگا،عامر کے رویے پر آئی سی سی ان کی واپسی کا خواہشمند ہے بلکہ آئی سی سی نے تو کہا بھی تھا کہ کیونکہ آئی سی سی قوانین میں فکسنگ کی کم ازکم سزا ہی پانچ سال تھی ورنہ عامر کو اس سے بھی کم سزا ملتی تو پھر جب عامر پہلے ہی ضرورت سے زیادہ سزا بھگت چکا ہے تو پھر اس کی واپسی پر اعتراض نہیں کیاجاسکتا جو لوگ عامر کے خلاف موقف رکھتے ہیں ان کو بھی میں غلط نہیں سمجھتا لیکن اب اس معاملے کو چھوڑکر آگے بڑھنے کی ضرورت ہے اور عامر اب قومی اسکواڈ کا حصہ بن گیا ہے۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -