وزیر اعلیٰ سندھ ملیر بار کی تقریب میں عدلیہ پر ہی برس پڑے

وزیر اعلیٰ سندھ ملیر بار کی تقریب میں عدلیہ پر ہی برس پڑے
وزیر اعلیٰ سندھ ملیر بار کی تقریب میں عدلیہ پر ہی برس پڑے

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )وزیر اعلیٰ سند ھ سید قائم علی شاہ عدلیہ پر برس پڑے جس پر وہاں موجود وکلا اور دو جج تقریب چھوڑ کر چلے گئے ۔وزیر اعلیٰ سندھ ملیر بار کی تقریب میں شرکت کے لیے گئے جہاں انہوں نے خطاب کے دوران عدلیہ کو ہی آڑے ہاتھ لے لیا اور اپنی تنقید کا نشانہ بنا یا ۔ان کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ چور راستے کی تاڑ میں رہتے ہیں ،پراسیکیوٹر سپریم کورٹ کے حکم پر کام کر رہے ہیں ۔قائم علی شاہ نے استفسار کیا کہ پلی بارگین کا پیسہ کہاں جاتا ہے ۔وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے عدلیہ پر تنقید کرنے پر تقریب میں موجود وکلااور دوجج احتجاجی طور پر وہاں سے چلے گئے ۔

اس موقع پر قائم علی شاہ نے کہا ہمیں کہا جاتا ہے کہ سندھ میں کرپشن ہو رہی ہے اور افسران کو کرپشن کے نام پر اٹھا لیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے کراچی میں امن کے لیے ہماری مدد کی ہے لیکن پتہ نہیں کہ اب وفاق ہماری مدد کرے گا یا نہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں رینجرز اور پولیس نے امن کے قیام کے لیے بہتر کام کیا ہے جس سے حالات میں بہتری آئی ہے ۔

مزید :

کراچی -