عجب پریم کی غضب کہانی، بھارتی لڑکا پاکستانی کے پیار میں لڑکی بن گیا

عجب پریم کی غضب کہانی، بھارتی لڑکا پاکستانی کے پیار میں لڑکی بن گیا
عجب پریم کی غضب کہانی، بھارتی لڑکا پاکستانی کے پیار میں لڑکی بن گیا

  

نئی دلی (مانیٹرنگ ڈیسک) محبوب کو پانے کے لئے لوگ خود کو بدل لیتے ہیں، لیکن بھارت کے ایک نوجوان نے اپنے پاکستانی محبوب کو پانے کے لئے اپنی جنس ہی تبدیلی کر لی، اور یوں رومانوی داستانوں کی تاریخ میں ایک منفرد باب کا اضافہ کر دیا۔

اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق لکھنﺅ سے تعلق رکھنے والے نوجوان گوروو کو، جو کہ کتھک ڈانس سے گہرا شغف رکھتا ہے، اپنی پی ایچ ڈی کے دوران لوک داستانوں اور موسیقی کے موضوع پر تحقیقی کام کے سلسلہ میں پاکستان سے تعلق رکھنے والے نوجوان رضوان سے واسطہ پڑا، جو اکثر صوفی فکر اور نظریات کے بارے میں اس کی رہنمائی کرتا تھا۔ دونوں کے درمیان علمی بات چیت رفتہ رفتہ رومانوی راز و نیاز میں بدل گئی اور گوروو کو محسوس ہوا کہ وہ رضوان کے عشق میں مبتلا ہوچکا تھا۔

مزید جانئے؛ ملکہ حسن کہلانے والی یہ حسینہ دراصل کون ہے؟ پولیس نے کارروائی کی تو ایسی شرمناک حقیقت سامنے آگئی کہ گرفتار کرنا پڑگیا

ادھر رضوان کے گھر والوں کو اس کی شادی کی فکر ہوئی تو اس کے لئے لڑکی ڈھونڈنے لگے۔ جب گوروو کو اس بات کا پتہ چلا تو اسے اپنا محبوب چھن جانے کا خوف لاحق ہوا، اور واحد یہی حل نظر آیا کہ وہ خود ہی لڑکی کا روپ دھارلے اور رضوان کی دلہن بن جائے۔ گوروو نے ممبئی کے سرجن ڈاکٹر متھلیش مترا سے رابطہ کیا، جنہوں نے اسے چھ ماہ کی مشاورت کے بعد ہارمون تھراپی کے لئے بھیج دیا، اور پھر اس کے تین آپریشن کئے، جن کے نتیجے میں وہ گوروو سے” میرا“ بن گئی۔

میرا کا کہنا ہے کہ اس کی بہن، جو کہ ممبئی میں ایک اداکارہ ہیں، کے سوا ہر ایک نے تبدیلی جنس کے خیال کی مخالفت کی، لیکن وہ اپنے عشق کے ہاتھوں اس قدر بے بس تھی کہ مرد سے عورت بننے پر مجبور ہوگئی۔ ابھی تک اس کی اپنے محبوب کے ساتھ ملاقات صرف انٹرنیٹ کے ذریعے ہی ممکن رہی ہے، لیکن مارچ میں جب وہ اس سے ملنے آئے گا تو یہ پہلی آمنے سامنے ملاقات ہوگی۔ اپنوں پرایوں کی مخالفت کے باوجود میرا رضوان کے ساتھ شادی کے لئے پرعزم ہے، اور پر امید ہے کہ دونوں ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ رہیں گے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -