بھارتی فوج نے بانڈی پورہ کے دیہات کو محاصرے میں لے لیا ، کاروبار زندگی معطل

بھارتی فوج نے بانڈی پورہ کے دیہات کو محاصرے میں لے لیا ، کاروبار زندگی معطل

سری نگر(کے پی آئی) بھارتی فوج نے جمعرات کوبانڈی پورہ کے نصف درجن سے زیادہ دیہات کو محاصرے میں لے کر تلاشی مہم شروع کر دی ہے جبکہ جنوبی کشمیر میں دوسرے روز بھی شہادتوں کے خلاف کاروبار زندگی معطل رہا فون انٹر نٹ سروس اور ریل سروس بھی معطل رہی ۔شہادتوں کے خلاف کو لگام اور ( اسلام آباد ) اننت کے کئی علاقوں میں تعزیتی ہڑتا ل رہی جس کے دوران دکانیں اور کارو باری ادارے بند رہے ۔کولگام ،کیموہ،کھڈونی ، دیوسر، پہلو ،حبلش اور دیگر جگہوں پر مکمل ہڑتا ل کے بیچ نوجوانوں کی ایک ٹولیاں کئی مقامات پر سڑ کوں پر نکل آ ئیں اور انہوں نے فورسز پر پتھراؤکیا۔ادھر شوپیان میں ہڑتال کے دوران شدید جھڑپیں ہوئیں۔صبح کے وقت اگر چہ قصبہ میں دوکانیں کھلی تھیں تاہم بعد میں نوجوانوں کی ٹولیاں سڑکوں پر نکل آئیں اور نعرے بازی کی۔ اسکے ساتھ ہی وہاں سے گزرنے والی پولیس گاڑیوں پر زبردست پتھراؤ کیا جس کی وجہ سے افرا تفری مچ گئی۔ بٹہ پورہ چوک ،گول چکری، اولڈ بس اسٹینڈ اور میمندر شوپیا ن میں فورسز اور مظاہرین کے بیچ جھڑپوں کا سلسلہ کافی دیر تک جاری رہا۔پولیس نے مظاہرین کو منتشرکرنے کیلئے آنسوگیس کے گولے داغے ۔ ادھر سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یسین ملک پر مشتمل مشترکہ مزاحمتی قیادت نے شہری ہلاکتوں کے خلاف بطور احتجاج 13جنوری یعنی سنیچر کو وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دی ہے۔مزاحمتی قیادت نے کہا ہے کہ ایک منظم منصوبے کے تحت نوجوانوں کو مارا جارہا ہے اور ان ہلاکتوں کے بارے میں تحقیقات کے احکامات محض ایک فریب کاری ہے۔قیادت نے عوام سے اپیل کی ہے کہ فورسز کے ہاتھوں معصوم شہریوں کی شہادتوں کے خلاف بطور احتجاج 13جنوری کو مکمل ہڑتال کی جائے ۔

مزید : عالمی منظر