قصور پولیس پرسے عوام کا اعتماد ختم ہوچکا : میاں وسیم اختر شیخ

قصور پولیس پرسے عوام کا اعتماد ختم ہوچکا : میاں وسیم اختر شیخ

قصور(بیورورپورٹ)ممبر قومی اسمبلی میاں وسیم اختر شیخ نے کہا ہے ڈی پی او قصور کی تبدیلی کی بجائے معصوم زینب کے معاملہ میں غفلت کے مرتکب دیگر پولیس افسران کو معطل کیا جائے کیونکہ ان پولیس افسران پرسے قصور کے عوام کا اعتماد ختم ہوچکا ہے ان کی عدم توجہ کی وجہ سے ایسے حالات پیدا ہوتے ہیں انصاف کی فراہمی کیلئے ایسے افسران کو قصور سے فارغ کیا جانا ضروری ہے۔گزشتہ روز’’ پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے میاں وسیم اختر شیخ کا مزید کہنا تھا درندہ صفت انسان کا عمرہ کی سعادت حاصل کرنے کیلئے گئے ہوئے والدین کی معصوم بیٹی زینب کا اغواء ،جنسی تشدد کے بعد قتل نہ صرف افسوسناک واقعہ ہے بلکہ قصور پولیس کی نااہلی کا ثبوت ہے ۔چار روز تک مغویہ کی بازیابی نہ ہوناپولیس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ واقعہ کی فوٹیج مل جانے کے باوجودملزموں کی گرفتاری نہ ہونا شرمناک فعل ہے۔ پولیس پر تنقید کرتے ہوئے انکا یہ بھی کہنا تھا ڈی پی او سمیت دیگر پولیس افسران عام آدمی کا فون تک نہیں سنتے ،ایس ایچ او ز سرکاری موبائل رکھنے کے باوجود فون نہیں سنتے جرائم کی بیخ کنی کیلئے پولیس اور عوام میں رابطہ اور عوام کا پولیس پر اعتماد ہونا ضروری ہے۔ ملزم کی گرفتاری کیلئے کیے گئے پنجاب حکومت کے عملی اقدامات کو سراہتے ہوئے انکا کہنا تھا وزیر اعلیٰ شہباز شریف جرائم کی بیخ کنی کیلئے پولیس کو وسائل فراہم کررہے ہیں مگر اس میں کوتاہی کے مرتکب پولیس افسران ،اہلکاران کسی رعایت کے مستحق نہیں ۔ معصوم زینب کے قاتل گرفتار ہونے تک قصور کے عوام جذبات پر کنٹرول نہیں کر سکتے کیونکہ یہ پہلا واقعہ نہیں ،مگر چند شر پسند عناصرقصور کے عوام کا سکھ چین تباہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں ، ایسے واقعات پر سیاست کرنا انسانیت کی تذلیل ہے زینب کے والدین کو انصاف کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے تمام تر وسائل استعمال کیے جائیں گے۔ملزم کو کیفرکردار تک پہنچایاجائے گا۔

وسیم اختر شیخ

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...