دنیا میں بد امنی کی بڑی وجہ عالمی طاقتوں کی دوغلی پالیسی ، امریکہ کے عدالتی نظام پر اعتبار نہیں کرتا : طیب اردوان

دنیا میں بد امنی کی بڑی وجہ عالمی طاقتوں کی دوغلی پالیسی ، امریکہ کے عدالتی ...

انقرہ (آئی این پی)ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے میں امریکہ کے عدالتی نظام پر اعتبار نہیں کرتا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق طیب اردوان نے بیش تیپے کے ملت کنونشن سینٹر میں منعقدہ انصاف شوریٰ سے خطاب میں انصاف کے پہلو پر زور دیتے ہوئے کہا ہمارا د ین ہم پر جو ذمہ داریاں عائد کرتا ہے ان میں سے اہم ترین ذمہ داری منصفانہ رویہ اختیار کرنا ہے۔مغربی ممالک میں آزادیوں اور جمہو ر یت کی تلا ش کے پس پردہ متحرک عنصر کے اصل میں انصاف کی تلاش ہونے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہم دیکھتے ہیں ترک تا ریخ میں بھی ان حکمرانوں کو اچھے الفاظ میں یاد کیا گیا ہے جو منصف اور عادل تھے۔ سلجوقی اور عثمانی دور میں عدل و انصاف کے ادارے اپنے ہم عصر ادا ر و ں سے کہیں زیادہ ترقی یافتہ تھے۔ ایک وسیع جغرافیہ میں600سالہ عثمانی حکومت کے دور میں اگر آج ہمیں کوئی چھوٹی سی بھی قابل شرمند گی ا و ر منفی چیز نہیں ملتی تو اس کا واحد سبب یہ تھا حکومتی نظام عدل و انصاف کیساتھ چلایا جاتا تھا۔ ماضی میں عثمانی حکومت میں شامل جغرافیاوں میں آ ج جو ظلم و ستم ، قتل عام اور انسانیت سوز جرائم ہو رہے ہیں وہ سب ناانصافی کی پیداوار ہیں۔15جولائی 2016میں ترکی میں بغاوت کے خونی اقدام میں ملوث فیتو دہشت گرد تنظیم کے سرغنہ کی امریکی حمایت پر انکا کہنا تھا جب ہم امریکہ میں پلنے والے اس دہشتگرد کا مطالبہ کرتے ہیں تو امریکہ اسے ہمارے حوالے نہیں کرتا لیکن جب امریکہ نے ہم سے 12دہشت گردوں کا مطا لبہ کیا تو ہم نے انہیں اس کے حوالے کر دیا۔ فیتو دہشتگرد تنظیم سے متعلق4050کلو وزنی دستاویزات امریکہ بھیجی گئیں لیکن ان کی نگاہ میں قا نو ن کا ذرہ برابر احترام نہیں ۔امریکہ میں ترکی کیخلاف سیاسی چال کے طور پر استعمال کئے جانیوالے نام نہاد پابندیوں کے دعوے کا جائزہ لیتے ہوئے انہوں نے کہا امریکی حکام اپنے سیاسی فیصلوں کیساتھ ترکی کو چیلنج کرنے کے رجحان کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ میں امریکہ کے اس نوعیت کے نام نہاد پابندیوں کے دعوے سے متعلق فیصلوں کا نہ تو احترام کرتا ہوں اور نہ ہی ان پر اعتبار کرتا ہوں۔دہشتگرد تنظیموں کیلئے امریکہ اور مغرب کے طرز عمل پر تنقید کرتے ہوئے ترک صدر کا کہنا تھا صرف اپنے لئے جمہوریت، آزادیوں ، قانون اور خوشحالی کی خواہش رکھنے والوں لیکن جب بات دوسروں کی ہو تو سب سے بڑے فاشسٹ، ڈکٹیٹر اور استحصالی بن جانیوالوں کا انجام قریب آ رہا ہے۔ یہ دنیا اتنی زیادہ نا انصافی اتنے زیادہ ظلم کی متحمل نہیں ہو سکتی۔

مزید : کراچی صفحہ اول