جولائی تا دسمبر 2018 تجارتی خسارہ 17 ارب 96 کروڑ ڈالر کی بلند ترین سطح پر

جولائی تا دسمبر 2018 تجارتی خسارہ 17 ارب 96 کروڑ ڈالر کی بلند ترین سطح پر

ملتان( جنرل رپورٹر ) مالی سال2017-18 کی پہلی ششماہی میں ملک کا تجارتی خسارہ 17 ارب 96 کروڑ 30 لاکھ ڈالر کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا ہے ۔ مالی سال 2016-17 کی پہلی ششماہی(بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

میں تجارتی خسارہ 14 ارب 42 کروڑ 80 لاکھ ڈالر رہا تھا ‘ تجارتی خسارہ میں اضافے کی شرح 24.50 فیصد رہا ‘ پاکستان بیورو آف سٹیٹکس کی رپورٹ کے مطابق جولائی ‘ دسمبر 2017 میں برآمدات ’ایکسپورٹ ‘ میں اضافہ 11.24 فیصد رہا جبکہ درآمدات ’امپورٹس ‘ میں اضافے کی شرح 19.11 فیصد رہی ‘ دسمبر 2017 میں دسمبر 2018 کے مقابلے میں ملک سے ایکسپورٹس میں اضافہ 14.81 فیصد رہا ۔ دسمبر 2017 میں دسمبر 2018 کے مقابلے میں ملک میں درآمدات میں اضافہ 10.91 فیصد رہا ‘ جولائی ‘ دسمبر 2017-18 میں ملک سے مجموعی ایکسپورٹس 11 ارب 7 لاکھ ڈاگر رہیں ‘ جولائی ‘ دسمبر2016-17 میں ایکسپورٹس کا حجم 9 ارب 98 کروڑ 50 لاکھ ڈاگر رہا تھا ‘ ایکسپورٹ ایک ارب 11 کروڑ 20 لاکھ ڈالر بڑھیں ‘ جولائی ‘ دسمبر 2017 میں امپورٹس کا حجم 28 ارب 97 کروڑ ڈالر رہا ۔ جولائی ‘ دسمبر 2016 میں امپورٹس 24 ارب 32 کروڑ 30 لاکھ ڈالر رہی تھیں ۔ امپورٹس میں بقایا جات اضافہ 4 ارب 89 کروڑ 70 لاکھ ڈالر رہا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر