ابراہیم حیدری کے سکول میں چوکیدار نے 5 سالہ بچی سے مبینہ طور پر زیادتی کی : ایس ایس پی ملیر

ابراہیم حیدری کے سکول میں چوکیدار نے 5 سالہ بچی سے مبینہ طور پر زیادتی کی : ایس ...
ابراہیم حیدری کے سکول میں چوکیدار نے 5 سالہ بچی سے مبینہ طور پر زیادتی کی : ایس ایس پی ملیر

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار کا کہنا ہے کہ ابراہیم حیدری کے سکول میں چوکیدار نے 5 سالہ بچی سے مبینہ طور پر زیادتی کی ہے، بچی اور ملزم کا میڈیکل ٹیسٹ کرانے کے بعد حقائق واضح ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے ابراہیم حیدر ی کے نجی سکول میں 5 سالہ بچی کے اغوا کی کوشش کا واقعہ پیش آیا جسے علاقہ مکینوں نے ناکام بنادیا۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ چوکیدار عیدو نے 5 سالہ بچی کو گود میں اٹھا رکھا تھا اور نکلنے کا موقع ڈھونڈ رہا تھا، بچی کے شور مچانے پر اسے پکڑ لیا گیا اور تشدد کا نشانہ بنا کر رینجرز کے حوالے کردیا گیا۔

متعلقہ خبر: کراچی ، ابراہیم حیدری میں 5 سالہ بچی کے اغوا کی مبینہ کوشش ناکام ، سکول چوکیدار نے ننھی پری سے زیادتی کی کوشش کی: راﺅ انوار

ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار کا کہنا ہے کہ چوکیدارنے گزشتہ روز بچی سے مبینہ طور پر زیادتی کی تھی ۔ بچی کے ساتھ زیادتی کا پتہ اسے بخار ہونے پر لگا جس پر اہل خانہ اسے ہسپتال لے گئے اور پولیس کو اطلاع نہیں کی تاہم آج (جمعہ کو) بچی کے اہل خانہ اور اہل علاقہ نے سکول میں آکر چوکیدار کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ ایس ایس پی راﺅ انوار نے کہا کہ سکول کے چوکیدار ملزم عیدو کو پولیس نے گرفتار کرکے تھانے منتقل کردیا ہے، بچی اور چوکیدار کا میڈیکل کرایا جائے گا جس کے بعد حقائق سامنے آسکیں گے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ حالیہ واقعہ پیش آنے کے بعد یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ ملزم عیدو پہلے بھی بچوں کے ساتھ بداخلاقی کرتا رہا ہے لیکن اس کے خلاف شکایت نہیں آئی تھی، ملزم سے مکمل تفتیش کی جائے گی۔

مزید : Breaking News /اہم خبریں /جرم و انصاف /علاقائی /سندھ /کراچی