سپریم کورٹ کا یو سی ایچ ہسپتال کی بحالی کیلئے قائم سٹیرنگ کمیٹی کو اجلاس کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم 

سپریم کورٹ کا یو سی ایچ ہسپتال کی بحالی کیلئے قائم سٹیرنگ کمیٹی کو اجلاس کر ...
سپریم کورٹ کا یو سی ایچ ہسپتال کی بحالی کیلئے قائم سٹیرنگ کمیٹی کو اجلاس کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ آف پاکستان نے یو سی ایچ ہسپتال کی بحالی کے لئے قائم سٹیرنگ کمیٹی کو اجلاس کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا ۔ چیف جسٹس نے کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیے کہ جن ٹھیکیداروں نے بڑے بڑے ٹھیکوں کے ذریعے کروڑوں کمائے ہیں وہ یو سی ایچ کی بحالی کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں کیس کی سماعت کی ۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہسپتال کی جگہ پر شادی گھر نہیں بننے دیں گے۔یو سی ایچ لاہور کی شان تھا اب کھنڈر بن گیا ہے،یوسی ایچ میں 2آپریشن تھیٹر تھے دونوں ہی ناکارہ ہو چکے ہیں۔بہترین ہسپتال کی کسی نے دیکھ بھال نہیں کی، ہم نے ہسپتال کادورہ کیا تو عجیب صورتحال تھی، ہسپتال کی اراضی پر کیے گئے قبضے بھی واگزارکرائے، ،ہسپتال کی بجلی کٹ چکی تھی، 48 لاکھ روپے دے کر بحالی کرائی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی اور ایف سی کالج نے ٹیچنگ فیکلٹی فراہم کرنے کی یقین دہانی کروائی ہے ،جن ٹھیکیداروں نے بڑے بڑے ٹھیکوں کے ذریعے کروڑوں کمائے ہیں بحالی کے لیے اپنا کردار ادا کریں ۔حکومت نے ہسپتال کی بحالی کے لیے 25 فیصد رقم کی ادائیگی کی یقین دہانی کروائی ہے ۔حکومت نے پہلے بھی بحالی کے لیے کوشش کی مگر تمام کارروائی بے سود رہی ۔عدالت عظمیٰ نے یوسی ایچ ہسپتال کی بحالی کیلئے سٹیئرنگ کمیٹی کو اجلاس کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔علاوہ ازیں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں بینچ نے ہسپتالوں کے باہر کوڑے کے ڈھیر کے خلاف درخواست پر سماعت کی اور چار ہفتے میں ہسپتالوں کے باہر کوڑے کے ڈھیر ختم کرنے کا حکم دے دیا۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ چھوٹے چھوٹے معاملات انتظامیہ کو خود دیکھنے چاہئیں ،ادارے خود کام کریں، ایسے معاملات سپریم کورٹ میں نہیں آنے چاہئیں۔

مزید : قومی