روزنامہ پاکستان کی ویڈیو پر ایکشن، چیف جسٹس نے ذہنی مریض کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا

روزنامہ پاکستان کی ویڈیو پر ایکشن، چیف جسٹس نے ذہنی مریض کی سزائے موت پر ...
روزنامہ پاکستان کی ویڈیو پر ایکشن، چیف جسٹس نے ذہنی مریض کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) روزنامہ پاکستان کی جانب سے ایک ذہنی مریض سزائے موت کے قیدی کے حق میں اٹھائی گئی آواز کارگر ثابت ہوئی۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے ذہنی مریض کی سزائے موت پر عملدر آمد روک دیا۔

روزنامہ پاکستان کی خاتون اینکر نور امان اللہ کی جانب سے سزائے موت کے قیدی خضر حیات کا معاملہ اٹھایا گیا تھا۔ فیس بک پر لائیو ویڈیو میں انہوں نے پاکستان سائیکاٹرک سوسائٹی کے اس ڈاکٹر کے ساتھ تفصیلی بات چیت کی جو خضر حیات کی پھانسی رکوانے کیلئے سرگرم ہے۔ پاکستان سائیکاٹرک سوسائٹی کے مطابق خضر حیات کی دماغی بیماری اس قدر شدید ہے کہ وہ ذہنی امراض کے کینسر کی صورت اختیار کرچکی ہے۔

روزنامہ پاکستان کی جانب سے یہ مسئلہ اٹھایا گیا تو چیف جسٹس نے اس کا نوٹس لیتے ہوئے ذہنی مریض کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا۔ سپریم کورٹ میں 14 جنوری کو کیس سماعت کیلئے مقرر کردیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ ذہنی مریض خضر حیات کو 15 جنوری کو  کوٹ لکھپت جیل لاہور میں پھانسی ہونا تھی۔ اس کیس کی مزید تفصیلات جاننے کیلئے یہ ویڈیو دیکھیں ۔

مزید : Breaking News /اہم خبریں /قومی