ان ہاؤس تبدیلی سے نیا وزیر اعظم لانا چاہتے ہیں:رانا ثناء اللہ

ان ہاؤس تبدیلی سے نیا وزیر اعظم لانا چاہتے ہیں:رانا ثناء اللہ

  



لاہور(جنرل رپورٹر)مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ کی زیر صدارت پارٹی کی تنظیم سازی کے حوالے سے اہم اجلاس ہوا،اجلاس میں نوازشریف،شہبازشریف کو خراج تحسین پیش کرنے اور رانا ثناء اللہ کیس پر جوڈیشل کمیشن بنانے سمیت پانچ قراردادیں متفقہ طور پر منظور کی گئیں۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر رانا ثناء اللہ،جنرل سیکرٹری اویس لغاری،عظمیٰ بخاری،ندیم کامران،رانا مشہود،ذکیہ شاہنواز،سعود مجید،منشاء اللہ بٹ،رانا ارشد،ملک احمد خان،وارث کلو،ذیشان رفیق،راجہ قمر اسلام،خواجہ عمران نذیر سمیت دیگر موجود تھے۔اجلاس میں پارٹی کو مزید فعال کرنے اور پارٹی کی تنظیم سازی کا سلسلہ جلد از جلد مکمل کرنے پر اتفاق کیا گیا۔اجلاس میں منظور کردہ قراردادوں میں میاں نوازشریف کی جلد صحتیابی کیلئے خصوصی دعاگو، مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے،تما م لیگی رہنماؤں کیخلاف جھوٹے کیسز بنانے کی شدید مذمت کی گئی ا ورکہا گیا کہ مسلم لیگ (ن) تمام سیاسی اسیران کو خراج تحسین پیش کرتی ہے۔ قراردادوں میں رانا ثناء اللہ کو جھوٹے کیس میں سزا کاٹنے پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔دریں اثنامسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) ووٹ کو عزت دو کے بیا نیہ سے پیچھے نہیں ہٹی۔ انہوں نے مریم نواز کے پارٹی عہدے سے استعفیٰ کے تردید کی اور کہا کہ   مریم نواز میاں نوازشریف کی صحت کی وجہ سے خاموش ہیں۔ملک کے مسائل کا واحد حل نئے الیکشن ہیں۔وہ گزشتہ روز ماڈل ٹاؤن پارٹی سیکرٹریٹ میں پریس کانفرنس کررہے تھے۔رانا ثناء اللہ نے کہا کہ حکومت انتقام کی پالیسی پر گامزن ہے، مخالفین کو چن چن کر نشانہ بنایا جا رہا ہے، چاہتے ہیں ان ہاوَس تبدیلی ووٹ کے ذریعے آئے، سکون قبر میں ملتا ہے تو کیا پوری قوم کو قبر میں لٹانا چاہئے، مہنگائی کی وجہ سے سب پریشان ہیں، ووٹ کو عزت دو سے مراد عوامی رائے کا احترام کیا جائے۔ حکومت کے پاس ایک ہی پالیسی ہے جو انتقام ہے،حکومت کو سیاسی انتقام کے باعث مشکلات پیش آ رہی ہیں۔ موجوہ حکومت کو کل 5 ووٹوں کی اکثریت حاصل ہے، متفقہ وزیرِاعظم آئے، جس کے بعد الیکٹورل ریفارمز لائی جائیں۔انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی میں اپنے کیس کے حقائق کو سامنے رکھا، نواز شریف واپس آئیں گے اور اپنے بیانیے کو آگے بڑھائیں گے۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت پر کسی کو اعتراض نہیں، البتہ طریقہ کار پر اعتراض ہے۔ ووٹ کو عزت دو کا کہا لیکن آج ووٹ کہہ رہا ہے مجھے عزت دو، حکومتی اتحادیوں کی عجیب صورتِ حال ہے۔نون لیگی رہنما رانا ثناء اللّٰہ نے یہ بھی کہا کہ اتفاقِ رائے سے نیا وزیرِ اعظم آنا چاہیے، ان لوگوں کو فارغ کیا جائے اور نئے لوگ لائے جائیں۔

رانا ثنا اللہ

مزید : صفحہ اول


loading...