لاہور بار الیکشن،جی اے خان طارق صدر،ریحان خان سیکرٹری منتخب

لاہور بار الیکشن،جی اے خان طارق صدر،ریحان خان سیکرٹری منتخب

  



لاہور(نامہ نگار) لاہوربارکے انتخابات میں عاصمہ جہانگیر گروپ کے امیدوار جی اے خان طارق 3055ووٹ لے کر نئے صدرمنتخب ہوگئے جبکہ ان کے مدمقابل حامد خان گروپ کے صدارتی امیدوار رانا انتظار حسین نے 2 ہزار 75 ووٹ جبکہ میاں اسرار گروپ کے امیدوار نے825ووٹ حاصل کئے،حامی وکلاء نے جیت کی خوشی میں مٹھائیاں تقسیم کیں اور ڈھول کی تھاپ پر بھنگڑے ڈالے۔تفصیلات کے مطابق لاہوبار ایسوسی ایشن کے انتخابات2020ء کے غیرحتمی اور غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق عاصمہ جہانگیر گروپ کے حمایت یافتہ جی اے خان طارق نے 3 ہزار 55 ووٹوں لے کر کامیابی حاصل کی،ان کے مدمقابل حامد خان گروپ کے صدارتی امیدوار رانا انتظار حسین نے 2 ہزار 75 ووٹ جبکہ میاں اسرار گروپ کے صدارتی امیدوار 825 ووٹ حاصل کرسکے ہیں،جنرل سیکرٹری کی نشست پر ریحان خان 3 ہزار 406 ووٹ لے کرکامیاب قرارپائے جبکہ ان کے مدمقابل سلطان حسن نے3 ہزار 253،احمد سعد خان 2 ہزار 823 اور سیدہ عظمی گیلانی 313 ووٹ حاصل کرسکیں،لاہوربار کے نائب صدر کی نشست پر رانا محمد نعیم 2 ہزار 754 ووٹ حاصل کرکے کامیاب قرارپائے،ان کے مدمقابل نائب صدر کی نشست پر امیدوار خرم میر نے ایک ہزار 425 جبکہ سجاد بٹ ایک ہزار 192، کرم نظام راں 2 ہزار 273، غلام عباس 774 اور شکیلہ اختر رانا ایک ہزار 571 ووٹ حاصل کرسکیں،ماڈل ٹاؤن کی نائب صدر کی نشست پر ندیم ضیاء بٹ 3 ہزار 480 ووٹوں سے کامیاب ہوگئے جبکہ ان کے مدمقابل رانا کوثر سلہری 2 ہزار 114 ووٹ حاصل کر سکے،جوائنٹ سیکرٹری کی نشست پر میاں اسامہ 2 ہزار 590 ووٹوں سے لاہور بار کے جوائنٹ سیکرٹری منتخب ہوگئے جبکہ ان کے مدمقابل امیدوارعلی نور بلوچ 152، نمرہ بٹ ایک ہزار 556اور سائرہ لودھی نے ایک ہزار 554 ووٹ حاصل کئے،فنانس سیکرٹری کی نشست پر علی عمران بھٹی نے 4 ہزار 464 ووٹوں سے کامیابی حاصل کی جبکہ ان کے مدمقابل امیدوار سید ثمر نقوی نے ایک ہزار 288 ووٹ حاصل کئے،اسی طرح لاہور بار ایسوسی ایشن کے آڈیٹر کی نشست پر چودھری عمران رفیق 3 ہزار 126 ووٹوں سے کامیاب قرارپائے جبکہ ان کے مد مقابل امیدوار خواجہ التمش مقصود2 ہزار 551 ووٹ حاصل کر سکے،لاہوربار کے9957ووٹرز میں سے 6 ہزار 104 وکلاء نے بائیو میٹرک طریقے سے ووٹ کاسٹ کئے،اس موقع پر سکیورٹی کے بھی سخت انتظامات کئے گئے تھے اور کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کے لئے پولیس کی بھاری نفری بھی تعینات کی گئی تھی۔

لاہور بار الیکشن

مزید : صفحہ اول