”ہم سنتے تھے کہ جہانگیر ترین ڈپٹی وزیراعظم ہیں لیکن کچھ دن پہلے ایک واقعہ پیش آیا کہ ۔۔“ سینئر صحافی محمد مالک نے حیران کن دعویٰ کر دیا

”ہم سنتے تھے کہ جہانگیر ترین ڈپٹی وزیراعظم ہیں لیکن کچھ دن پہلے ایک واقعہ ...
”ہم سنتے تھے کہ جہانگیر ترین ڈپٹی وزیراعظم ہیں لیکن کچھ دن پہلے ایک واقعہ پیش آیا کہ ۔۔“ سینئر صحافی محمد مالک نے حیران کن دعویٰ کر دیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )معروف کاروباری شخصیت اور سیاستدان جہانگیر ترین پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رکن ہیں اور وزیراعظم عمران خان کے قریبی بھی سمجھے جاتے ہیں جبکہ انہوں نے 2018 کے عام انتخابات میں بھی عمران خان کو جتوانے کیلئے سرگرم کردار ادا کیا تاہم اب سینئر صحافی محمد مالک نے دلچسپ انکشاف کر دیاہے ۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے صحافی محمد مالک نے دعویٰ کیا کہ کچھ ہفتے پہلے کی بات ہے ، ہم سب سنتے تھے کہ شائد جہانگیر ترین خان ڈپٹی پرائم منسٹر ہیں ، وہ پی ٹی آئی کی بہت اہم شخصیت ہیں تاہم اب پتا لگاہے کہ وہ بھی ڈپٹی پرائم منسٹر نہیں ہیں ، میں آپ کو تصدیق شدہ واقعہ بتا رہاہوں ۔انہوں ںے کہا کہ جہانگیر ترین نے پرنسپل سیکریٹر اعظم صاحب سے کوئی درخواست کی جس پر انہوںنے پی ٹی آئی رہنما کے چہرے پر ہی مبینہ طورپر واضح جواب دیا کہ دو وزیراعظم نہیں بلکہ ایک ہی ہوں گے ، وہاں کافی تلخ کلامی ہو گئی جس کے بعد وزیراعظم کو مداخلت کر کے معاملے کو ختم کروانا پڑا تاہم اب وہ شائد ایک دوسرے سے بات چیت بھی نہیں کرتے ہیں ، تو خاص کے اندر بھی خاص ہیں ۔

یاد رہے کہ جہانگیر ترین خان کو سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیا گیا جس کے بعد اب الیکشن میں حصہ نہیں لے پائے تھے لیکن انہوں نے عمران خان کی انتخابی مہم میں بھر پور حصہ لیا اور شہر شہر جا کر کام کرتے رہے ، اس کے علاوہ انتخابات میں کامیابی کے بعد حکومت بنانے کیلئے دیگر سیاسی جماعتوں سے راوبط کرنے اور انہیں پی ٹی آئی کا ساتھ دینے پر رضامند کرنے کے پیچھے بھی جہانگیر ترین کا کردار بتایا جاتا ہے ۔

مزید : قومی


loading...