ایران میں طیارے کی تباہی کے بعد سعودی بادشاہ اور ولی عہد نے یوکرینی قیادت کو پیغامات ارسال کردیئے

ایران میں طیارے کی تباہی کے بعد سعودی بادشاہ اور ولی عہد نے یوکرینی قیادت کو ...
ایران میں طیارے کی تباہی کے بعد سعودی بادشاہ اور ولی عہد نے یوکرینی قیادت کو پیغامات ارسال کردیئے

  



ریاض (ویب ڈیسک) ایران میں غلطی سے ایک میزائل لگنے سے یوکرین کا مسافر ہوائی جہاز کریش ہونے کے واقعے پرسعودی عرب کی قیادت نے یوکرینی صدر اور قوم سے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔العربیہ کے مطابق خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کی طرف سے یوکرین کے صدر ولادی میر زیلنسکی کو طیارہ حادثے پر تعزیتی برقی پیغامات ارسال کیے گئے ہیں۔

سعودی پریس ایجنسی'ایس پی اے' کے مطابق سعودی قیادت کی طرف سے طیارہ حادثے پر یوکرینی صدر سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے یوکرین کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔دونوں رہ نماﺅں کی طرف سے ارسال کردہ برقی پیغامات میں طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے خاندانوں سے بھی دلی ہمدردی اور غم گساری کا اظہار کیا گیا۔ دونوں رہ نماﺅں کا کہنا ہے کہ یوکرینی مسافر بردار جہاز کا ایرانی میں میزائل حملے کا نشانہ بننا انتہائی دکھ اور افسوس کا باعث ہے اور اس واقعے پر پوری دنیا کو صدمہ پہنچا ہے۔ مشکل اور دکھ کی اس گھڑی میں سعودی عرب دوست ملک یوکرین کے ساتھ ہے۔

خیال رہے کہ 8 جنوری بہ روز بدھ یوکرین کا ایک مسافر ہوائی جہاز تہران میں گرکر تباہ ہوگیا تھا۔ طیارے میں عملے سمیت 176 افراد سوار تھے اور کوئی زندہ نہیں بچ سکا تھا۔گذشتہ روز ایران نے اعتراف کیا ہے کہ طیارے کا حادثہ انسانی غلطی کا نتیجہ تھا اور اسے کروز میزائل سمجھ کر بیلسٹک میزائل سے نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں طیارہ المناک حادثے کا شکار ہوگیا۔

مزید : عرب دنیا