دنیا کا سب سے خطرناک جنسی درندہ، 195 مردوں کا ریپ کر ڈالا

دنیا کا سب سے خطرناک جنسی درندہ، 195 مردوں کا ریپ کر ڈالا
دنیا کا سب سے خطرناک جنسی درندہ، 195 مردوں کا ریپ کر ڈالا

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ماں تو آخر ماں ہوتی ہے، کوئی انسان خواہ شیطان بن جائے اور دنیا اسے سولی پر لٹکانے چلی ہو مگر اس کی ماں کا دل پھر بھی اس کے لیے تڑپ تڑپ جائے گا۔ برطانیہ میں 195مردوں کا جنسی استحصال کرنے والے دنیا کے سب سے خطرناک جنسی درندے کی ماں نے بھی اپنے بیٹے کے متعلق ایسے ہی درد کا اظہار کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق 36سالہ رین ہارڈ سیناگا نامی یہ شخص، انڈونیشیاءکا شہری ہے جو برطانیہ میں سٹوڈنٹ کے طور پر آیا اور لیڈز یونیورسٹی میں زیرتعلیم رہا۔ وہ ہم جنس پرست تھا اور مردوں کو ورغلا کر مانچسٹر میں واقع اپنے فلیٹ پر لے جاتا اور وہاں ان کا جنسی استحصال کرتا۔ اس نے 195مردوں کے ساتھ یہ قبیح حرکت کی۔ ان میں سے 48کو اس نے نشہ آور دوا دے کر بے ہوش کرکے ان کے ساتھ غلط حرکات کیں اور ان کی ویڈیوز بھی بنائیں۔

اسے گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا جہاں سے اسے 60سال قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا گیا ہے۔ رین ہارڈ کے والدین انڈونیشیاءکے شہر دیپوک میں رہتے ہیں۔ سنڈے ٹائمز کو انٹرویو دیتے ہوئے اس کی والدہ کا کہناتھا کہ ”میرے بیٹے نے جو کچھ بھی کیا، میرے لیے وہ آج بھی میرا بچہ ہے۔ وہ ایسا کبھی نہیں تھا۔ بہت کم گھر سے باہر نکلتا تھا، ہر اتوار کو میرے ساتھ چرچ جاتا تھا۔ اسے پڑھنے کا بہت شوق تھا۔ جب برطانیہ میں اس کی تعلیم ختم ہوئی تو میں نے اس کی منتیں کیں کہ واپس آجاﺅ لیکن وہ نہیں آیا۔میرے لیے اب بھی یقین کرنامشکل ہے کہ اس نے اتنے زیادہ لوگوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔“ واضح رہے کہ عدالتی فیصلے کے مطابق پیرول پر رہائی کے لیے بھی رین ہارڈ کو کم از کم 30سال قید کاٹنی ہو گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس