ڈالر خرید کر جمع کرنے والے پاکستانیوں کی شامت آگئی، کارروائی شروع

ڈالر خرید کر جمع کرنے والے پاکستانیوں کی شامت آگئی، کارروائی شروع
ڈالر خرید کر جمع کرنے والے پاکستانیوں کی شامت آگئی، کارروائی شروع

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اس وقت ڈالر کی قیمت پاکستان میں بہت بڑھ چکی ہے اور روپے کی تاریخی بے قدری ہو رہی ہے۔ اس حوالے سے ایف بی آر نے انکشاف کیا ہے کہ 2017-18ءمیں 24ہزار پاکستانیوں نے بڑی مقدار میں ڈالر خرید کر ذخیرہ کیے جس سے ملک میں ڈالر کی کمی واقع ہو گئی۔ ایف بی آر نے ڈالر جمع کرنے والے ان 24ہزار لوگوں کے خلاف تحقیقات شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ویب سائٹ globalvillagespace.com کے مطابق ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ ان لوگوں کے ٹیکس ریکارڈ کا جائزہ لیا جا رہا ہے جس کے بعد ان کے خلاف تحقیقات شروع کی جائیں گی۔

ایف بی آر حکام کے مطابق ان چوبیس ہزار میں سے 9ہزار 880لوگوں کا تعلق لاہور سے ہے۔ ان لوگوں کی فہرست لاہور کے ریجنل ٹیکس آفس کو بھجوا دی گئی ہے۔ ریجنل آفس ان لوگوں کو نوٹس جاری کرے گا اور ان سے ذرائع آمدن اور اتنی بڑی مقدار میں ڈالرز خریدنے کے متعلق پوچھے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ان لوگوں نے ود ہولڈنگ ٹیکس سے بچنے کے لیے بینکوں سے اپنی رقوم نکلوا لیں اوران سے ڈالر، پاﺅنڈز، یوروز اور سونا خرید کر رکھ لیا۔ اب ان تمام لوگوں کے خلاف تحقیقات شروع ہونے جا رہی ہیں۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد