کیا ایم کیو ایم اور اتحادی جماعتوں کی ناراضی سے تحریک انصاف کی حکومت کو کوئی خطرہ ہے؟ صحافی مظہر عباس کے دعویٰ نے پی ٹی آئی سپورٹرز کو خوش کردیا

کیا ایم کیو ایم اور اتحادی جماعتوں کی ناراضی سے تحریک انصاف کی حکومت کو کوئی ...
کیا ایم کیو ایم اور اتحادی جماعتوں کی ناراضی سے تحریک انصاف کی حکومت کو کوئی خطرہ ہے؟ صحافی مظہر عباس کے دعویٰ نے پی ٹی آئی سپورٹرز کو خوش کردیا

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف تجزیہ کار اور سینئر صحافی مظہر عباس نے وفاقی وزیر خالد مقبول صدیقی کے وزارت سے استعفیٰ دینے پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ خالد مقبول صدیقی کا وزیر بننے کا بنیادی فیصلہ ہی غلط تھا کہ وہ کنوینئر ہوتے ہوئے بھی کابینہ کا حصہ بن گئے جس کی وجہ سے اُن پر پارٹی کا شدید دباؤ تھا، ایم کیو ایم حزب اختلاف کے بینچز پر جاتے ہوئے نظر نہیں آ رہی وہ حکومت کے ساتھ ہی کھڑی رہے گی۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئےسینئر صحافی مظہر عباس کا کہناتھا کہ وفاق کی جانب سےایک ہفتہ قبل ہونے والے اجلاس میں طے ہوا تھا کہ کراچی اور حیدرآباد کے فنڈز جاری کر دیے جائیں گے لیکن اب تک فنڈز جاری نہیں کیے گئے شاید اسی وجہ سے ایم کیو ایم نے کابینہ سے نکلنے کا فیصلہ کیا ہے،ایم کیو ایم حکومت سے علیحدگی کا اعلان کرے یا دیگر کوئی جماعت وفاقی حکومت سے خوش نہ ہو اس کے باوجود وفاقی حکومت کہیں نہیں جا رہی۔مظہر عباس نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کا پیپلز پارٹی سے بنیادی اختلاف یہ ہے کہ صوبائی حکومت نے کراچی کے اختیارات اپنے ہاتھ میں رکھے ہوئے ہیں اور فنڈز بھی جاری نہیں کیے جا رہے۔انہوں نے کہا کہپیپلز پارٹی کے فیصلے سے بلاول بھٹو زرداری خوش نہیں ہیں اور اسمبلی میں پیپلز پارٹی رہنما نوید قمر نے جو اعلان کیا اس میں بلاول بھٹو کو اعتماد میں نہیں لیا گیا تھا۔ 

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...