نشتر ہسپتال: تنخواہیں ہضم کرنیکا معاملہ‘ اینٹی  کرپشن آفس میں ذمہ داروں سے تلخ سوالات

نشتر ہسپتال: تنخواہیں ہضم کرنیکا معاملہ‘ اینٹی  کرپشن آفس میں ذمہ داروں سے ...

  

  ملتان (وقا ئع نگار)نشتر ہسپتال میں ہاؤس آفیسرز اور پی جی آرز کے تنخواہوں کی مد میں کروڑوں روپے رقم کی خوردبرد پر سابق ڈائریکٹر فنانس غضنفر عباس۔بجٹ(بقیہ نمبر23صفحہ10پر)

 اینڈ اکاونٹس افیسر محمد ذیشان سمیت دیگر نے گزشتہ روز اپنا ایک بار پھر بیان جمع کروا دیا۔انکوائری افسر کے تلخ سوالات نے ملزمان کے پسینے چھڑوا دیئے۔جبکہ مرکزی ملزم بلال کلرک اپنے اقبال جرم پر برقرار  ہے۔ واضح رہے اینٹی کرپشن مذکورہ معاملے تاحال مجموعی طور نشتر ہسپتال ملازمین۔ بینک منیجر آمنہ سمیت 24 افراد کے بیان قلمبند کرچکی ہے۔مذکورہ  کیس میں گزشتہ روز نویں پیشی تھی۔یاد رہے پی ایم اے کے عہدیداروں کی درخواست پر انکوائری شروع کی تھی۔جس میں اکاونٹس برانچ کے کلرک بلال نے جعل سازی کے ذریعے  اپنے کزن کے بینک کے  اکانٹ میں 80 لاکھ روپے منتقل کیئے۔بعدازاں راز افشاں ہونے پر  بلال نامی کلرک نے 80 روپے کی رقم واپس یونیورسٹی اکانٹ میں ٹرانسفر کردی۔ذرائع کے مطابق اینٹی کرپشن کا یہ کیس اب آخری مراحل میں داخل ہوچکا ہے۔امید ظاہر کی جارہی ہے کہ رپورٹ مکمل ہونے پر ائندہ ایک دو دنوں  کے اندر ذمے داروں کے خلاف  مقدمہ درج کرلیا جائے گا۔

تلخ سوالات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -