مائیک پینس صدر کو نا اہل قرار دے کرفارغ کر یں، ورنہ مواخذہ ہو گا، قرارداد،امریکی کانگریس میں ٹرمپ کو ہٹانے کی کارروائی کا آغاز

مائیک پینس صدر کو نا اہل قرار دے کرفارغ کر یں، ورنہ مواخذہ ہو گا، ...

  

 واشنگٹن(اظہر زمان، بیورو چیف) توقع کے مطابق پیر کے روز کانگریس کے ایوان نمائندگان کے اجلاس میں ڈیمو کریٹک اکثریتی لیڈر سٹینی ہوپر نے ایک قرار داد پیش کر دی ہے۔اس میں نائب صدر مائیک پینس اور کابینہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ آئین میں 25ویں ترمیم کے تحت اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے صدر ٹرمپ کو نا اہل قرار دیکر ان کے عہدے سے ہٹا دیں کیونکہ وہ بلوائیوں کو کیپٹل ہل پر دھاوا بولنے پر اکسانے کی بناء پر بغاوت کے مرتکب ہوئے ہیں۔ قرار داد میں دھمکی دی گئی ہے کہ اگر نائب صدر پنس نے یہ اقدام نہ کیا تو پھر صدر ٹرمپ کو دوسری مرتبہ مواخذے کی تحریک کا سامنا کرنا پڑے گا۔ سرکاری ذرائع کے مطابق اگرچہ نائب صدر پینس صدر ٹرمپ کے اقدام پر ان سے سخت ناراض ہیں تاہم وہ ان کے خلاف کوئی کارروائی کرنے کا ارادہ نہیں رکھتے۔ معلوم ہوا ہے کہ ڈیمو کریٹک قرار داد پیش ہونے کے بعد اقلیتی ری پبلکن ارکان نے قانونی اختیار کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اس پر تیز رفتاری سے کارروائی کرنے کے عمل کو بلاک کر دیا۔ سپیکر نینسی پلوسی نے ایوان میں بتایا کہ اگر نائب صدر پنس نے چوبیس گھنٹے میں کارروائی نہ کی تو پھر بدھ کے روز صدر ٹرمپ کے مواخذے کے لئے باقاعدہ تحریک پر بدھ کے روز سے کارروائی شروع کر دی جائے گی۔ یاد رہے کہ دو سو سے زائد ارکان کے دستخطوں سے مواخذے کی تحریک پیر کے روز ایوان میں پیش ہو چکی ہے۔ تحریک کے محرک کانگریس مین ڈیوڈ سلین نے بتایا ہے کہ انہیں اس سلسلے میں کچھ ری پبلکن ارکان کی حمایت بھی حاصل ہے اس لئے یہ تحریک منظور ہونے کا واضح امکان ہے۔

ٹرمپ مخالف قرارداد

مزید :

صفحہ اول -