طالب علم کو جعلی سند دینے کا الزام ثابت‘ بورڈ کلرک کیخلاف شکنجہ تیار

   طالب علم کو جعلی سند دینے کا الزام ثابت‘ بورڈ کلرک کیخلاف شکنجہ تیار

  

 ملتان (وقا ئع نگار)بارہویں جماعت کے طالب علم سے لاکھوں روپے لیکر جعلی سند بناکر دینے کا الزام ثابت ہوگیا۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ نواں شہر تحصیل کبیر والا ضلع خانیوال کا رہائشی حاجی احمد نواز نے اینٹی کرپشن کو درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ سائل کا بیٹا احسن نواز سپیرئیر کالج مظفر گڑھ میں پڑھتا ہے۔اس نے سال 2015 میں ایف ایس سی کا امتحان(بقیہ نمبر28صفحہ10پر)

 دیا تو وہ ناکام ہوگیا۔ تعلیمی بورڈ ملتان دفتر  میں بطور کلرک کام کرنے والے مصری خان سے دوستانہ تعلقات تھے۔جسکو مخلتف اوقات میں تقریبا ساڑھے سات لاکھ روپے دیئے جس کے بدلے اس نے ایف ایس سی پاس کی سند دی۔ایف ایس سی پاس سند پر فرنٹیئر میڈکل ڈینٹل کالج ایبٹ آباد میں سلف فنانس پر داخلہ لیا۔اور کالج کو فیس کی مد میں 22 لاکھ روپے کی رقم ادا کی۔مجموعی طور پر 33 لاکھ روپے کے اخراجات آئے۔ویرفیکشن کرنے پر معلوم ہوا کہ ایف ایس سی کی سند جعلی نکلی ہے۔جو کراچی تعلیمی بورڈ سے بنی ہوئی تھی۔جس پر اینٹی کرپشن نے انکوائری شروع کی تو  مدعی و گواہان کے بیانات کی روشنی میں ملزم گہنگار ثابت ہوا۔اینٹی کرپشن کے انکوائری افسر  نے ملزم کے خلاف اندراج مقدمہ کیلئے پراسس شروع کردیا ہے۔ذرائع کے مطابق آئندہ چند دنوں میں مقدمہ درج کرلیا جائے گا۔

شکنجہ تیار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -