مظفر گڑھ: سہولت بازاروں مضر صحت آٹا سپلائی کرنیکا انکشاف

 مظفر گڑھ: سہولت بازاروں مضر صحت آٹا سپلائی کرنیکا انکشاف

  

مظفرگڑھ (بیورو رپورٹ‘ تحصیل رپورٹر) مظفرگڑھ میں آٹا غریب کی پہنچ سے باہر ہوگیا،15 کلو والے فائن آٹے کے تھیلے کی قیمت ایک ہزار روپے تک پہنچنے کے علاؤہ ضلع بھر کی دکانوں میں قائم مخصوص پوائنٹس پر بھی سرکاری آٹے کا تھیلا نایاب ہوگیا،حکومت سے سبسڈی ملنے کے باوجود بھی فلور ملز کی جانب سے سہولت بازاروں میں مضرصحت آٹا فراہم کیا جارہا ہے‘ تفصیلات (بقیہ نمبر59صفحہ10پر)

کے مطابق ضلع بھر میں 15 کلو والے فائن آٹے کا تھیلا کچھ روز قبل تک شہریوں کو 810 سے 830 تک عام دکانوں پر میسر تھا،مگر کچھ روز قبل ہی آٹے کی قیمتوں کو پراسرار طور پر پر لگ گئے،اس وقت ضلع بھر میں 15 کلو والے فائن آٹے کا تھیلا 920 روپے سے لیکر ایک ہزار روپے تک میں فروخت ہورہا ہے،فائن آٹے کے نرخ میں بڑے اضافے سے غریب شہریوں کی قوت خرید جواب دے گئی اور انکے لیے دو وقت کی روٹی کا حصول بھی ناممکن ہوگیا،دکانداروں کا کہنا ہے کہ انھیں فلور ملز کی جانب سے انتہائی مہنگے داموں آٹے کا تھیلا فراہم کیا جارہا ہے اور وہ اس لیے مہنگا تھیلا بیچنے پر مجبور ہیں،انھوں نے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ دکانداروں کیخلاف بلاوجہ کاروائی کرنے کی بجائے آٹا مہنگا فروخت کرنے والی فلور ملز کیخلاف کاروائی کی جائے،ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ضلع بھر کی مخصوص دکانوں میں سرکاری آٹے کی ترسیل کے لیے پوائنٹس بنائے گئے تھے مگر ان پوائنٹس پر بھی سرکاری آٹے کے تھیلے کی فراہمی بند کردی گئی ہے،پوائنٹس پر آٹے کی فراہمی بند ہونے سے عام شہری رل گئے ہیں،ذرائع کیمطابق ضلعی انتظامیہ کی جانب سے قائم کیے گئے چند سہولت بازاروں میں بھی صرف محدود تعداد میں سرکاری آٹے کے تھیلے فراہم کیے جارہے ہیں،فلور ملز کی جانب سے بھی جو سرکاری آٹا سہولت بازاروں میں فراہم کیا جارہا ہے وہ بھی مضرصحت اور کھانے کے قابل نہیں،محدود تعداد میں آٹے کے تھیلے میسر ہونے کے باعث سرکاری نرخ پر آٹے کے حصول کے لیے لوگ سہولت بازاروں میں دھکے کھانے پر مجبور ہیں،شہریوں کا کہنا ہے کہ دو وقت کی روٹی کا حصول پہلے ہی مشکل تھا،ایسے میں روزانہ آٹے کے حصول کے لیے لمبی لائنوں میں گھنٹوں کھڑے رہنے کے باعث انکے لیے روزانہ روزی روٹی کمانا بھی ناممکن ہوگیا ہے،شہریوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ سرکاری آٹا انتہائی مضرصحت اور ناقابل استعمال ہے،انھوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ سرکاری آٹے کا معیار چیک کیا جائے اور مضرصحت سرکاری آٹا مہیا کرنے والی فلور ملز کیخلاف کاروائی کی جائے۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -