کسی صنعت کو گیس سپلائی بند نہیں ہوئی، ڈی ایم ڈی سوئی سدرن

  کسی صنعت کو گیس سپلائی بند نہیں ہوئی، ڈی ایم ڈی سوئی سدرن

  

کراچی (اکنامک رپورٹر) سوئی سدرن کے ڈی ایم ڈی سعید لاڑک نے کہا ہے کہ کسی صنعت کو گیس کی سپلائی بند نہیں ہوئی، صرف کیپٹو پاور کو گیس سپلائی بند کی ہے۔کراچی میں گیس بحران پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے سعید لاڑک نے کہا کہ سوئی سدرن نظام میں گیس ضیاع کم ہوا ہے، کوویڈ کے باوجود ہم نے 5.1 بلین کیوبک فٹ گیس ضیاع کم کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ گیس کے ذخائر کم ہو رہے ہیں جس کا ایک حل ایل این جی ہے، بجلی گھروں اور ایکسپورٹ صنعت کو گیس دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گمبٹ سے جلد 20 ایم ایم سی ایف ڈی گیس آئے گی، اس کے علاوہ عائشہ گیس فیلڈ سے بھی گیس سسٹم میں آگئی ہے۔ڈی ایم ڈی سوئی سدرن نے کہا کہ لیاری کے لیے پانچ کلومیٹر کی پائپ لائن کا منصوبہ بنا لیا ہے۔دوسری جانب صنعتی تنظیموں کے نمائندوں نے بھی گیس بحران پر پریس کانفرنس کی ہے، صدر نارتھ کراچی انڈسٹریل زون نے کہا کہ گیس نہیں ہے ایکسپورٹ کیسے بڑھے گی۔معیز یوسف نے کہا کہ سندھ زیادہ گیس پیدا کرتا ہے لیکن گیس نہیں مل رہی۔صنعت کار رہنما نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ گیس کی قیمت بڑھانے پر اس لیے تیار ہوئے کہ گیس ملے گی۔ تاجر تنظیم کا کہنا ہے کہ ایل این جی نہ امپورٹ ہونے کے سبب گیس بحران آیا۔ہ صدر بن قاسم ایسو سی ایشن نے کہا کہ گیس بحران کی ذمہ دار وفاقی حکومت ہے کیونکہ وزارت انرجی نے خراب پلاننگ کی۔ 

مزید :

صفحہ آخر -