آن لائن بینکنگ فراڈ کی بڑی واردات، ایک ہی روز میں سولہ صارفین لٹ گئے 

آن لائن بینکنگ فراڈ کی بڑی واردات، ایک ہی روز میں سولہ صارفین لٹ گئے 
آن لائن بینکنگ فراڈ کی بڑی واردات، ایک ہی روز میں سولہ صارفین لٹ گئے 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) صوبائی دارلحکومت میں آن لائن بینکنگ فراڈ کی بڑی واردات ہوئی ہے جس دوران نجی بینک کے 16صارفین کو اپنی جمع پونجی سے ہاتھ دھونا پڑے ، متاثرین میں بزرگ پنشنرز بھی شامل تھے ۔

نجی ٹی وی چینل کے مطابق لاہور میں نجی ہاﺅسنگ سوسائٹی کی رہائشی خاتون کو ہفتے کی شام بینک کی طر ف سے میسج موصول ہوا کہ آپ کے اکاﺅنٹ سے ڈیڑھ لاکھ روپے ملتان کی رہائشی خاتون کے اکاﺅنٹ میں ٹرانسفر کردیئے گئے ہیں، تھوڑی دیر بعد ہی ایک اور پیغام موصول ہوا کہ اکاﺅنٹ سے مزیدایک لاکھ روپے نکال لیے گئے ہیں۔ خاتون نے بتایا کہ اس سے قبل جب ایک لاکھ روپے کی شاپنگ کریں یا نقدوصول کریں تو بینک کی طرف سے کال موصول ہوتی ہے اور تصدیق کی جاتی ہے کہ خود اکاﺅنٹ استعمال کیایا اس کاغلط استعمال تو نہیں ہوا تاکہ کارڈ بلاک کیا جائے لیکن اس بار بینک کی طرف سے کوئی کال نہیں آئی ۔ 

خاتون جب بینک پہنچی تو اس وقت صورتحال مزید گھمبیر ہوگئی جب وہاں پہلے سے لوگ اپنی شکایات کے اندراج کے لیے موجود تھے ، کسی کے اکاﺅنٹ سے لاکھوں روپے نکالے گئے تو بزرگ پنشنر بھی اپنے اکاﺅنٹ میں موجود 40ہزار روپے سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ بینک منیجر نے بات کرنے سے انکار کردیا اور دلاسہ دیا کہ جلد ازجلد آپ کو رقم فراہم کرنے کی کوشش کریں گے جبکہ بینک کی ہیلپ لائن پر خاتون نمائندہ نے بتایا کہ ہیکرز کا نیٹ ورک مضبوط ہے، بینک کی تمام تر سیکیورٹی کے باوجود ہیکنگ گروپ نے اپنا کام دکھایا۔ 

ایک بزرگ صارف نے بتایا کہ ہفتے کی شام انہیں میسج موصول ہوا کہ ساڑھے تین لاکھ روپے نکالے گئے، حالانکہ کارڈ ان کے پاس محفوظ تھا ۔ 

مزید :

بزنس -علاقائی -پنجاب -لاہور -