نیب کے کیسز صرف سیاسی بنیادوں پر ہیں، اسلام آباد ہائیکورٹ کا نیب پر اظہار برہمی، نیب ڈائریکٹر طلب

نیب کے کیسز صرف سیاسی بنیادوں پر ہیں، اسلام آباد ہائیکورٹ کا نیب پر اظہار ...
 نیب کے کیسز صرف سیاسی بنیادوں پر ہیں، اسلام آباد ہائیکورٹ کا نیب پر اظہار برہمی، نیب ڈائریکٹر طلب

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے اثاثہ جات کیس میں رہنما پیپلزپارٹی رخسانہ بنگش کی ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع کرتے ہوئے نیب ڈائریکٹر کوریکارڈ سمیت ذاتی حیثیت میں آئندہ سماعت پر طلب کرلیا۔جسٹس عامر فاروق نے نیب پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہاکہ نیب کے کیسز صرف سیاسی بنیادوں پر ہیں، عدالت نے کہاکہ ان کو بتائیں جن کو نہیں پتہ 26 سال ان معاملات میں زندگی گزاری،

اسلام آباد ہائیکورٹ میں آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں رہنما پیپلزپارٹی رخسانہ بنگش کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری کی سماعت ہوئی،رخسانہ بنگش کی جانب سے فاروق ایچ نائیک عدالت میں پیش ہوئے۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیاکہ درخواست گزار نے نیب سوالنامہ کا جواب جمع کرایا؟،فاروق ایچ نائیک نے رخسانہ بنگش کو بھیجاگیا سوالنامہ عدالت میں جمع کرادیا،جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ نیب کو پتہ نہیں ہوتا کہ وہ کیا کرتا ہے،سپریم کورٹ نے واضح کہا ہے کہ کال اپ نوٹس ضروری ہے، ایڈیشنل ڈائریکٹر کا کام یہی ہے کہ4 لائن لکھ کر آگاہ کریں۔

فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ نیب نے اختیارات کا استعمال کرکے نوٹس کیا، جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ روزانہ کی بنیاد پر سپریم کورٹ اور ہائی کورٹس فیصلے دیتے ہیں، نیب کو انگریزی سمجھ نہیں آتی کیا اب آرڈر اردو میں لکھنا ہوگا؟،نیب کال اپ نوٹس سپریم کورٹ کے فیصلے کے منافی ہے، سوالنامہ میں وراثت اور تعلیمی اسناد کا کیا کام جو آپ لوگ مانگ رہے ہیں۔

فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ اب تو یہی ہوگا کہ کوئی بزنس مین کوئی ٹرانزیکشن ہی نہ کرے، عدالت نے استفسار کیا کہ سٹیٹ بینک کو نوٹس کرتے ہیں تاکہ وہ بتائے اثاثہ جات کیس نیب کا دائرہ اختیار کیسے ہیں؟ ۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ ڈکلیئر اکاؤنٹ میں آپکا ذرائع آمدن کہاں سے آگیا؟،ڈکلیئر اکاؤنٹ سے ٹرانزیکشن پر ایف بی آر نے ہی پوچھنا ہے، نیب کہاں سے آگیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے نیب پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہاکہ نیب کے کیسز صرف سیاسی بنیادوں پر ہیں، عدالت نے کہاکہ ان کو بتائیں جن کو نہیں پتہ 26 سال ان معاملات میں زندگی گزاری، تفتیشی افسر نے کہا کہ کمپلینٹ کنفیڈنشل ہے اسے ہم نہیں دکھا سکتے۔

عدالت نے رہنما پیپلزپارٹی رخسانہ بنگش کی ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع کرتے ہوئے نیب ڈائریکٹر ریکارڈ سمیت ذاتی حیثیت میں آئندہ سماعت پر طلب کرلیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -