جے یو آئی کو بلوچستان کے بعد خیبرپختونخوا میں بڑا جھٹکا، اہم رہنما نے بغاوت کردی

جے یو آئی کو بلوچستان کے بعد خیبرپختونخوا میں بڑا جھٹکا، اہم رہنما نے بغاوت ...
جے یو آئی کو بلوچستان کے بعد خیبرپختونخوا میں بڑا جھٹکا، اہم رہنما نے بغاوت کردی

  

مانسہرہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) جمعیت علما اسلام (جے یو آئی ف) کو بلوچستان کے بعد خیبر پختونخوا میں بھی بڑا جھٹکا لگ گیا، اہم رہنما نے پارٹی سے راہیں جدا  کرنے کا اعلان کردیا۔

جے یو آئی کے سابق رکن صوبائی اسمبلی حاجی ابرار تنولی نے پارٹی سے راہیں جدا کرلیں۔ عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ابرار تنولی نے کہا کہ وہ جے یو آئی کی پالیسیوں کی وجہ سے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کر رہے ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ وہ اب ہر فورم پر جے یو آئی اور ن لیگ کا بھرپور مقابلہ کریں گے ۔ انہوں نے عوامی اجتماعی سے خطاب میں مولانا فضل الرحمان کی پالیسیوں پر بھی کھل کر تنقید کی۔

حاجی ابرار حسین تنولی 2013 میں قومی وطن پارٹی کے ٹکٹ پر رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہونے کے بعد تحریک انصاف سے اتحاد کے نتیجے میں جنگلات کے صوبائی وزیر بنے تھے۔ اس کے بعد انہوں نے جماعت اسلامی اور پھر جے  یو آئی میں شمولیت اختیار کی اب انہوں نے اعلان کیا ہے کہ وہ ساتھیوں سے مشاورت کے بعد کسی بھی سیاسی جماعت میں شمولیت کا اعلان کرسکتے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ پورے ضلع مانسہرہ میں وہ آئندہ ہر الیکشن میں جے یو آئی کی مخالفت کریں گے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل جے یو آئی بلوچستان میں بھی بغاوت ہوچکی ہے ۔ وہاں سے مولانا محمد خان شیرانی، حافظ حسین احمد سمیت چار اہم رہنماؤں نے مولانا فضل الرحمان کی پالیسیوں پر تنقید کی تھی جس کے بعد انہیں پارٹی سے نکال دیا گیا تھا۔ بعد ازاں ان رہنماؤں نے جمعیت علما اسلام پاکستان کے نام سے اپنی سیاسی جماعت قائم کرلی۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -