بے شک باطل مٹ جانے والی چیز ہے

بے شک باطل مٹ جانے والی چیز ہے

وفاقی وزیر برائے موسمیاتی تبدیلی جناب مشاہداللہ کا تازہ انکشاف یہ ہے کہ عمران خان غیر سنجیدہ آدمی ہے، اسے کسی بات کا پتہ نہیں۔ مشاہداللہ صاحب مسلسل سترہ سال تک عمران خان کابغور مطالعہ کرنے کے بعد اِس اہم نتیجے تک پہنچے ہیں لہٰذا ہم سب پر، بلکہ پوری قوم پر (بالخصوص عمران خان کے مداحوں پر ) یہ لازم قرار پاتا ہے کہ مشاہداللہ صاحب کے اس قومی اہمیت کے بیان کو سنجیدگی سے لیں اور عمران خان کے بارے میں اپنے نظریات پر نظرِ ثانی کریں۔ دراصل ہماری قوم میں بھیڑ چال کی روش عام ہے۔ شروع میں چند لوگ عمران خان کی لا علمی سے لا علم ہونے کی وجہ سے اُس کے پیچھے کیا لگے کہ لاکھوں، بلکہ کروڑوں لوگ سوچے سمجھے بغیر اندھا دُھند عمران خان کے کیمپ میں گھُس گئے ۔ ان عقل کے اندھوں کو عمران خان کی چھوڑی ہوئی دُھند میں کچھ دکھائی نہ دیا۔ اور وہ گمراہی کے گڑھے میں گرتے گئے۔ خدا کا شکر ہے کہ جناب مشاہداللہ کی برسوں کی ریسرچ کے بعد اب اِس دُھند کے چھٹنے کے آثار پیدا ہو رہے ہیں۔ کیوں نہ ہو آخر جناب مشاہداللہ خان موسمیاتی تبدیلیوں کے بھی ماہر ہیں۔ ان کی دُور رس نگاہوں نے دیکھ لیا ہے کہ اب اُن کے آفتابِ ریسرچ کی دھوپ میں یہ دُھندغائب ہونے کو ہے اورپھر یہ کروڑوں بھولے بھالے لوگ جلد جان جائیں گے کہ عمران خان غیر سنجیدہ آدمی ہے۔ اُسے کسی بات کا کچھ پتہ نہیں۔

جہاں تک میرا تعلق ہے مجھے تو پہلے ہی شبہ تھا کہ عمران خان غیر سنجیدہ آدمی ہے۔ اِس سلسلے میں جناب پرویز رشید کے بیانات سے مجھے اچھی خاصی رہنمائی مل رہی تھی۔ پرویز رشید صاحب بھی ریسرچ کے آدمی ہیں۔ شبانہ روز ریسرچ کے نتیجے میں ہی انہیں پتہ چلا تھا کہ عمران خان کبھی سچ نہیں بولتا ۔ اس کی ہر بات جھوٹ پر مبنی ہوتی ہے۔ چنانچہ ان کے بیانات کی روشنی میں جب بھی میں عمران خان کی کسی بات پر غور کرتا تو اُسے جھوٹ کا پلندہ ہی پاتا ۔ دُکھ تو اِس بات کا ہے کہ جناب پرویز رشیدکے بار بار کے انتباہ کے باوجود لوگ عمران خان کے بیانات میں واضح جھوٹ کو ابھی تک نہیں دیکھ سکے۔ یہی وجہ ہے کہ جناب پرویز رشید کو یہ بات بار بار اپنی سادہ لو ح قوم کو بتانا پڑ رہی ہے کہ عمران خان کی کسی بات کو سچ نہ سمجھ لینا، لیکن لوگ ہیں کہ پرویز رشید کی بات کو اِس کان سے سنتے ہیں نہ اَس کان سے ۔ وہ تو یہ بھی گوارا نہیں کرتے کہ ایک کان ہی سے سُن لیں۔ بعد میں بے شک دوسرے کان سے نکال دیں۔ پرویز رشید صاحب کو کم از کم یہ اطمینان تو ہو جائے کہ لوگوں نے ایک کان ہی سے سہی، ان کی بات سُنی تو ہے۔ اندرین حالات جناب پرویز رشید کو میرا مشورہ ہے کہ وُہ ہمّت نہ ہاریں۔ مانا کہ فی الحال لوگ ان کے سچ کو جھوٹ سمجھ رہے ہیں، لیکن انشاء اللہ وُہ دن جلد آئے گا جب ان کا سچ ،سورج کی طرح عوام کے سروں پر اس تمازت سے چمکے گا کہ لوگ چھتری لینے پر مجبور ہو جائیں گے ۔ اور پھر یہی لوگ جوق درجوق عمران خان کی پارٹی سے نکل کر کسی محبِ وطن پارٹی میں شرکت کرنے کے لئے بھاگ کھڑے ہوں گے۔ مانا کہ موجودہ صورتِ حال بڑی مایوس کُن ہے۔ لوگ عمران خان کے جھوٹ کے سحر کا شکار ہو کر ان محب وطن اور قوم کی خادم پارٹیوں کو چھوڑ کر عمران خان کی طرف بھاگ رہے ہیں، لیکن یہ چار دن کی چاندنی ہے۔ عنقریب لوگ عمران خان کے جھوٹ کی اندھیری رات کو اپنی آنکھوں سے دیکھ لیں گے اور روشنی کی تلاش میں پرویز رشید اور مشاہداللہ کو منزلِ مقصود سمجھ کر ان کی طرف دوڑ لگا دیں گے۔

جناب مشاہداللہ اور جناب پرویز رشید دونوں عظیم رہنما ہیں۔ وہ مسلسل قوم کی رہنمائی کئے جارہے ہیں۔ صبح اٹھتے ہی رہنمائی کا عمل شروع کرتے ہیں اور رات گئے تک جاری رکھتے ہیں۔ اگر فی الحال لوگ ان کی دکھائی ہوئی راہ پر چلنے کو تیار نہیں ہیں تو یہ لوگوں کی بدقسمتی ہے ۔ انشاء اللہ عنقریب ان کی آنکھوں پر پڑاہوا پردہ ہٹ جائے گا اور انھیں پتہ چل جائے گا کہ عمران خان ہمیشہ جھوٹ بولتاہے۔ وہ انتہائی غیرسنجیدہ اور جاہلِ مطلق شخص ہے۔ آخر میں یہ عرض کروں گا کہ یہ دونوں عظیم راہنما اس ارشادِربّانی کو یاد رکھیں: ’’حق آگیا اور باطل مٹ گیا۔بے شک باطل مٹ جانے والی چیز ہے‘‘۔

مزید : کالم

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...