یونان ، سمندر کے ذریعے آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد 77000سے تجاوز کر گئی

یونان ، سمندر کے ذریعے آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد 77000سے تجاوز کر گئی

ایتھنز(آئی این پی )عالمی ادارے کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین نے کہا ہے کہ اس سال تین جولائی تک سمندر کے ذریعے یونان آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد 77000 سے تجاوزکرگئی ۔ یہ افراد اپنے آبائی ملکوں میں مسلح تنازعات اور غربت سے بچنے کے لیے ترک وطن پر مجبور ہوئے۔اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین کے مطابق یونان کو پناہ گزینوں کی ’غیرمعمولی‘ ہنگامی صورتحال درپیش ہے، ایسے میں جب یونان کے جزیروں پر پناہ گزینوں کی آمد بڑھتی جا رہی ہے۔ یہ تناسب، 1000 افراد یومیہ ہے۔ اس سال تین جولائی تک سمندر کے ذریعے یونان آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد 77000 سے زائد ہے۔ یہ افراد اپنے آبائی ملکوں میں مسلح تنازعات اور غربت سے بچنے کے لیے ترک وطن پر مجبور ہوئے۔ اِن میں سے تقریباً 60 فی صد پناہ گزینوں کا تعلق شام سے ہے، جب کہ دیگر افغانستان، عراق، اریٹریااور صومالیہ سے ہیں۔عالمی ادارے کے ترجمان، ولیم اسپنڈلر نے جنیوا میں اپنے خطاب میں کہا ہے کہ یونان کی معاشی صورت حال دگرگوں ہے، ساتھ ہی نئے پناہ گزینوں کی بڑی تعداد میں جاری آمد ۔ ایسے حالات میں چھوٹے جزیروں والی برادریوں پر شدید دباؤ پڑ رہا ہے، جہاں پہلے ہی بنیادی ڈھانچے اور خدمات کی کمی ہے۔ ایسے میں بڑھتی ہوئی انسانی ضروریات کا مناسب بندوبست کرنا مشکل معاملہ ہے۔

مزید : عالمی منظر