مسجد اقصیٰ میں نماز کیلئے آنیوالی فلسطینی لڑکی پر صہیونی فوجیوں کا کا تشدد

مسجد اقصیٰ میں نماز کیلئے آنیوالی فلسطینی لڑکی پر صہیونی فوجیوں کا کا تشدد

بیت لحم (این این آئی)قابض صہیونی فوجیوں نے مسجد اقصیٰ میں نماز جمعہ کیلئے آنیوالی فلسطینی لڑکی کو بیت لحم کے شمال میں واقع گزرگاہ پر وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں وہ بری طرح زخمی ہوگئی ہے، تشدد کر کے زخمی کرنے کے بعد قابض فوجیوں نے اسے حراست میں لے لیا ہے۔عینی شاہدین کے مطابق صہیونی فوجیوں کی وحشیانہ درندگی کا نشانہ بننے والی فلسطینی لڑکی کی شناخت نور علی مناصرہ کے نام سے کی گئی ہے جس کی عمر 16سال ہے۔ تشدد کے بعد صہیونی فوجیوں نے اسے حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ نور علی مناصرہ بیت المقدس میں مسجد اقصیٰ میں نماز جمعہ کی ادائیگی کیلئے آرہی تھی کہ قابض فوجیوں نے اسے ایک چیک پوسٹ پر روکا اور بغیر کسی وجہ کے اسے تشدد کا نشانہ بنانا شروع کردیا۔ صہیونی فوج کی اس وحشیانہ کارروائی کے وقت فوجی چوکی پر سیکڑوں فلسطینی موجود تھے۔ انہوں نے قابض فوجیوں کی ننگی جارحیت پر سخت احتجاج کیا تو صہیونی فوجیوں نے انہیں بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔

مزید : عالمی منظر