گوجرانوالہ: بیرون ممالک جانیوالے 250 نوجوان کے ہلاک و لاپتہ ہونیکا انکشاف

گوجرانوالہ: بیرون ممالک جانیوالے 250 نوجوان کے ہلاک و لاپتہ ہونیکا انکشاف

گوجرانوالہ (بیورورپورٹ )گوجرانوالہ ڈویژن سے یورپین اور دیگر ممالک میں روزگار کمانے کی غرض سے جانے والے 250سے زائد نوجوانوں کے ہلاک و لاپتہ ہو نے کا انکشا ف ۔ ریجن بھر سے متعدد غیر قانونی کنسلٹنٹ اداروں ،دیگر ایجنسیوں اور بااثر انسانی سمگلروں نے کروڑوں روپے ہتھیا کر ان نوجوانوں کو غیر قانونی داخلے اور راستوں میں بے یارومددگار چھوڑ دیا تھا جنہیں فورسز اور بارڈر سیکورٹی نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا جبکہ بہت سے برفانی اور پہاڑی راستوں میں بھٹک جانے پر سسک سسک کر موت کے منہ میں جاکر جنگلی جانوروں کی خوراک بن گئے جبکہ اتنے بڑے پیمانے پر انسانی جانوں کے ضیاع اور سمگلنگ کے باوجود دولت کے پجاری یہ جان لیوا کھیل سرعام کھیل رہے ہیں جس میں مبینہ طور پر کئی سیاسی افراد امیگریشن حکام اور ایف آئی اے کے افسران و ملازمین بھی ملوث ہیں ۔بتایا جاتا ہے کہ ڈویژن کے اضلاع گجرات ، سیالکوٹ ، نارووال ، منڈی بہاؤالدین ، گوجرانوالہ ، حافظ آباد کے علاوہ لاہور ، سرگودھا ، فیصل آباد ، قصور ، اوکاڑہ ، ساہیوال وغیرہ کے رہائشی سینکڑوں نوجوانوں اور بیروزگاروں نے اس ڈویژن سے تعلق رکھنے والے ریڈ بک کے اشتہاری انسانی سمگلروں ، غیر قانونی کنسلٹنٹ اداروں کو رس لینگوئج اور دیگر ایجنسیوں کے ہتھے چڑھ کر یونان ، جاپان ، امریکہ ، کینڈا ، برطانیہ ، آئیر لینڈ ، آسٹریلیا وغیرہ میں پر کشش تنخواہوں اور مراعات کی پیشکش پر کروڑوں روپے کا کیش ادا کیا اور ان نوسر بازوں نے ان سادہ لوح اور بھولے بھالے افراد کو ایرانی ، افغانی ، انڈین ، اور چائنہ وغیرہ کے خشکی ، سمندری اور پہاڑی علاقوں کے ذریعے مختلف کنٹینروں ، لوڈرگاڑیوں اور لانچوں کے ذریعے وہاں پر اپنے مخصوص کارندوں کے ذریعے غیر قانونی طور پر براستہ ترکی پہنچانے کے لیے حوالے کیا جہاں کئی واقعات میں مذکورہ ممالک کی سیکورٹی نے ان افراد کو اندھا دھند فائرنگ کر کے انکی لاشوں کو بے گوروکفن پڑا دینے دیا جبکہ بہت سے نوجوانبرفانی اور دشوار ترین پہاڑی علاقوں میں پیدل سفر کے دوران خواراک و پانی کی عدم دستیابی پر دم توڑ گئے جبکہ بیسیوں آدم خور انسانی سمگلروں نے لانچوں میں بے ہوشی کی دوا پلاکر انہیں گہرے سمندر میں پھینک دیا جہاں وہ مچھلیوں کی خوراک بن گئے ذرائع کے مطابق حالیہ کچھ عرصے میں گوجرانوالہ ڈویژن سے انسانی اسمگلروں کے ہاتھوں موت کے منہ اور لاپتہ ہونے والے افرادکی تعداد 200سے زائد بتائی جارہی ہے جبکہ سرکاری ریکارڈ کے مطابق بھی دنیا بھر میں سب سے زیادہ انسانی سمگلروں کے ریڈ بک کے موسٹ وانٹڈ اشتہاریوں کا تعلق بھی اسی ڈویژن سے بتایا جاتا ہے جو کہ متعدد ممالک کی ایجنسیوں کو سینکڑوں مقدمات میں مطلوب ہیں مگران میں بیشتر اکثر اوقات انکے آبائی علاقوں میں دیکھا جاتا ہے اور متعدد سرکاری محکموں کے بااثر افسراو ملازمین کی مبینہ ملی بھگت سے ہر پھیرے میں تازہ سے تازہ نوجوانوں کی کھیپ بیرون ممالک میں لیکر جاتے ہیں ذرائع کے مطابق شہریوں کی بہت بڑی تعداد متعدد ممالک کی جیلوں میں کئی کئی سالوں سے ناگردہ گناہوں کی سزا بھگت رہی ہے اور وہاں کی حکومتیں ان کی قیدیوں کے بارے میں کوئی سزا جزا کا فیصلہ نہیں کر رہی ہیں اور وہاں ان بے گناہ قیدیوں کو بری طرح تشدد کا نشانہ بنانے کے علاوہ ان سے گندے ترین کام لیے جاتے ہیں جبکہ ایف آئی اے کے بعض افسران کے مطابق وہ کسی بھی اطلاع اور مخبری پر فوری ریڈ کر کے انسانی اسمگلروں کو گرفتار کر کے جیل خانے بھجواتے ہیں اور اس میں وہ کوئی رعایت نہیں کرتے ۔

بیرون ملک ہلاکتیں

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...