ضیاءاللہ آفریدی کو سینے میں تکلیف، تمام ٹیسٹ کلیئر نکلے

ضیاءاللہ آفریدی کو سینے میں تکلیف، تمام ٹیسٹ کلیئر نکلے
ضیاءاللہ آفریدی کو سینے میں تکلیف، تمام ٹیسٹ کلیئر نکلے

پشاور (ویب ڈیسک) جسمانی ریمانڈ ملنے کے بعد صوبائی احتساب کمیشن کی تحویل میںجاتے ہی صوبائی وزیر معدنیات ضیاءاللہ آفریدی کو سینے میں تکلیف کی شکایت پر دو دفعہ ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم ہسپتال میں تمام ٹیسٹ کلیئر قرار دئیے گئے، ذرائع کے مطابق گزشتہ ایرات ایک بجے صوبائی وزیر ضیاءاللہ آفریدی کو سینے کی تکلیف کی شکایت پر حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں لے جایا گیا جہاں ان کی ای سی جی سمیت دیگر تشخیصی ٹیسٹ کئے گئے تاہم ان ٹیسٹوں میں کسی مرض کی تشخیص نہ ہوسکی جبکہ دوبارہ انہیں پیٹ کے نچلے حصے میں تکلیف کی شکایت پر سرجیکل یونٹ شفٹ کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے انہیں طبی علاج فراہم کیا، سرجیکل یونٹ میں صوبائی وزیر کو صبح پانچ بجے تک زیر علاج رکھا گیا، صحتیابی پر ہسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سرجیکل یونٹ میں بھی انہیں کسی بڑے مرض یا تکلیف کی نشاندہی کی گئی ڈاکٹروں کی جانب سے اسے رمضان المبارک میں مختلف خوراک سے اکثر اوقات معمول کی شکایت قرار دیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق صوبائی وزیر معدنیات کو ہسپتال میں ہتھکڑیاں لگائے ہوئے لایا گیا جبکہ اس دوران احتساب کمیشن کے علاوہ پولیس اہلکار بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ مقامی اخبار کے مطابق جمعہ کی رات ضیاءاللہ آفریدی نے رات بارہ بجے سے لے کر صبح پانچ بجے تک طبیعت خراب ہونے کا ڈرامہ رچایا۔ ادھر پی ٹی آئی کارکنوں نے تیسرے روز بھی رات گئے ضیاءاللہ آفریدی کی حمایت میں ریلی نکالی اور جی ٹی روڈ کو فردوس کے مقام پر ٹریفک کیلئے بند کردیا۔ مظاہرین نے حکومت کےخلاف شدید نعرہ بازی کی اور مطالبہ کیا کہ ضیاءاللہ آفریدی کو جلد رہا کیا جائے۔ صوبائی وزیر معدنیات ضیاءاللہ آفریدی کی گرفتاری کے بعد سیکرٹری معدنیات میاں وحید الدین بھی گرفتاری کے خوف سے روپوش ہوگئے ہیں، وہ چھ روز سے غائب ہیں۔

مزید : پشاور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...