گناہ سے بچنے کیلئے عورت اپنے شوہر کیخلاف عرب ملک کی عدالت میں پہنچ گئی

گناہ سے بچنے کیلئے عورت اپنے شوہر کیخلاف عرب ملک کی عدالت میں پہنچ گئی
گناہ سے بچنے کیلئے عورت اپنے شوہر کیخلاف عرب ملک کی عدالت میں پہنچ گئی

  

قاہرہ (مانیٹرنگ ڈیسک) گناہ سے بچنے کے لیے ایک بچی ماں اپنے ہی شوہر کیخلاف علیحدگی کے لیے مصر کی عدالت میں پہنچ گئی اور موقف اپنایاکہ وہ ہمیشہ ہی اس سے دوررہتاہے جس کی وجہ سے وہ گناہ کرسکتی ہے، عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد خاتون کے حق میں فیصلہ سنایا اورعلیحدگی کی اجازت دیدی ۔

نیوزویب سائٹ ایمرٹس 24/7کے مطابق نوجوان خاتون نے دارلحکومت قاہرہ کی عدالت میں بتایاکہ اُن کی شادی کو 12سال ہوگئے ہیں جن میں تقریباً مجموعی طورپر چھ ماہ اس کا خاوند اس کے ساتھ رہا، شادی کے فوری بعد وہ سعودی عرب چلاگیاتھا اوروعدہ کرتارہاکہ وہ اسے اور ان کی چھوٹی بیٹی کو بھی خلیجی ملک میں لے جائے گا۔درخواست گزار خاتون کاکہناتھاکہ ہر مرتبہ اس نے شوہر کو اپنا وعدہ پورا کرنے کی یقین دہانی کرائی ، اس نے ہزار بہانے کیے ، وہ ہرتین یا چار سال بعد ہمارے پاس آتاہے ، میں نے بیٹی کی وجہ سے بہت برداشت کیا لیکن اب مصرمیں زندگی مشکل ہوگئی ہے اور وہ اب مزید برداشت نہیں کرسکتیں ، میں کوئی غلطی کرسکتی ہوں جس کی وجہ سے اللہ تعالیٰ ناراض ہوں گے ۔

رپورٹ کے مطابق درخواست گزار خاتون کے شوہرنے اپنی بیوی پر پیسوں کے لالچ کی وجہ سے طلاق مانگنے کا الزام عائد کردیا اور کہاکہ وہ اپنی بچت خاتون کے نام پربینک میں جمع کراچکاہے لیکن عدالت نے خاتون کے حق میں فیصلہ دیا اور جوڑے کا علیحدہ کرنے کا فیصلہ سنادیا۔

مزید : انسانی حقوق