امریکہ نے بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتیوں میں ترقی پذیر ممالک اور ناخواندہ قوموں کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

امریکہ نے بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتیوں میں ترقی پذیر ممالک اور ناخواندہ قوموں ...

واشنگٹن(اے این این)امریکہ میں لڑکیوں سے متعلق انسانی حقوق کمیشن نے کمسن لڑکیوں سے جنسی زیادتی کے ہوشربا اعداد و شمار بیان کرتے ہوئے کہاہے کہ امریکہ میں ہر 4میں سے ایک 18سال سے کم عمر کی لڑکی جنسی زیادتی کی شکار بن رہی ہے ،ان میں زیادہ تر تعداد ان لڑکیوں کی بھی ہے جو سکول کی تعلیم سے بھاگ کر جیلوں میں پہنچ جاتی ہیں ۔تازہ ترین رپورٹ کے مطابق امریکہ کی بعض ریاستوں میں نابالغوں سے متعلق عدالتی نظام میں 80فیصد کمسن لڑکیوں سے جنسی زیادتی کی ہوشربا تاریخ موجود ہے ۔یہ رپورٹ لڑکیوں سے متعلق انسانی حقوق کی تنظیم اور جارج ٹاﺅن مرکزقانون برائے غربت و عدم مساوات نے جاری کی ۔ انسانی حقوق کمیشن کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر ملکہ سعدہ سار اور رپورٹ مرتب کرنے والے مصنف نے واشنگٹن میں ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایاکہ اعداد و شمار اکٹھے کرنے کے بعد یہ حقائق سامنے آئے ہیں کہ ریاست آریگان کی جیلوں میں قید 93فیصد لڑکیوں کو جنسی ہوس مٹانے کیلئے استعمال کیاگیا ان میں سے سے 76فیصد تعداد ان معصوم بچیوں کی بھی ہے جن کی عمریں 13سال سے کم ہےں ۔ریاست کیلی فورنیا کی جیلوں میں قید 18فیصد کمسن لڑکیوں کےساتھ جنسی زیادتی ہوئی ہے ان میں چالیس فیصد وہ لڑکیاں بھی شامل ہیں جن کےساتھ لوطی فعل کیاگیا ہے ۔رپورٹ کے مطابق امریکہ میں 45فیصد کمسن لڑکیوں کو یا تو جلایاگیا یا شدید جسمانی تشدد کا نشانہ بنایاگیاہے ۔نابالغوں سے متعلق عدالتی نظام کے مطابق امریکہ میں کمسن لڑکیوں کے ساتھ زنا بالجبر اور تشدد کے واقعات میں ہوشربااضافہ ہورہاہے ۔

مزید : انسانی حقوق

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...