سیاسی قائدین پر حملوں کا خدشہ، فول پروف سیکیورٹی دی جائے ،رحمن ملک

سیاسی قائدین پر حملوں کا خدشہ، فول پروف سیکیورٹی دی جائے ،رحمن ملک

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پیپلزپارٹی کے رہنما و چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے داخلہ سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین پر حملوں کا خدشہ ہے،فول پروف سیکورٹی فراہم کی جائے،جاری کردہ سیکورٹی تھریٹ الرٹس کے مطابق انتخابی مہم اور ریلیوں پر حملے ہوسکتے ہیں ،کسی بھی ناخوشگوار واقعے رونما ہوا تو متعلقہ صوبائی حکومت و ضلعی انتظامیہ ذمہ دار ہوگا،یہ ہدایت انہوں نے قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کی جانب سے وزارت داخلہ کو لکھے گئے خط میں کی۔سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ کہ 9 جولائی کو نیکٹا اور اس سے پہلے الیکشن کمیشن پاکستان نے کمیٹی کے سامنے ممکنہ دہشتگردی کی خدشات کا اظہار کیا تھا،نیکٹا نے کمیٹی کو کچھ اہم سیاسی شخصیات کیلئے تھریٹ الرٹس جاری کرنے کے متعلق بریفنگ دی تھی،نیکٹا نے ملک بھر سے چھ سیاسی شخصیات کے نام بھی کئے جن کے کمپین و ریلیوں پر حملہ ہوسکتا ہے،ان تفصیلات کے پیش نظر وزارت داخلہ کو سارے پارٹیوں کی قائدین کی سیکورٹی کے احکامات جاری کئے گئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پارٹی قائدین اور ان شخصیات جنکے لئے سیکورٹی تھریٹ الرٹ جاری ہوئے ہیں کی سیکورٹی فل پروف کی جائے،وزارت داخلہ کو دوبارہ بتایا جاتا ہے کہ الیکشن کے دوران سیکورٹی سخت ترین کی جائے،پارٹی قائدین، امیدوران، ووٹرز اور الیکشن عملے کی خفاظت کیلئے غیر معمولی سیکورٹی انتظامات کی جائے،وزارت داخلہ فوری طور پر سیکورٹی کیلئے ایس او پی تیار کرکے صوبائی حکومتوں کو ہدایات جاری کریں،وزارت داخلہ کے زیرنگرانی ایس او پی کو باہمی کورڈینیشن کے ذریعے نافذ العمل کرے۔اے این پی رہنماہارون بلور کی شہادت پر خیبرپختونخوا حکومت سے رپورٹ طلب کرلی ہے،تھڑیٹ الرٹس کے باوجود سیکورٹی کے بھرپور انتظامات کیوں نہیں کئے گئے تھے،ہارون بلور کی شہادت قابل افسوس اور درد ناک ہے جسنے بشیر بلور شہید کی یاد دلا دی،حکومت شہید ہارون بلور کیلئے انکے بہادری پر ستارہ شجاعت کا اعلان کرے،بلور خاندان کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا۔

رحمان ملک

مزید : صفحہ اول