جوہر آباد : گھریلو جھگڑا ، سنگدل ماں کے ہاتھوں 4بچے اور خاونڈ قتل

جوہر آباد : گھریلو جھگڑا ، سنگدل ماں کے ہاتھوں 4بچے اور خاونڈ قتل

جوہرآباد(نمائندہ پاکستان)ریاض کالونی جوہرآباد میں ایک سنگ دل عورت گلناز نے گھریلو جھگڑوں سے تنگ آکر اپنے خاوند،دو بیٹیوں اور دو بیٹوں پر مشتمل پورے کنبے کو کلہاڑیوں اور چھریوں کے پہ در پہ وار کرکے موت کی نیند سلا دیا اور قتل کی سنگین واردات کے بعد ملزمہ گلناز نے مقتولین کی نعشوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اور تھانہ جاکر گرفتاری دیدی ۔ پولیس نے مقتولین 34سالہ محمد اجمل اس کے 13سالہ بیٹے فہد ، ڈیڑھ سالہ بیٹے عبداللہ ، 10سالہ بیٹی عائشہ اور 8سالہ بیٹی عاصمہ کی نعشوں کا ضلعی ہیڈکوارٹر ہسپتال جوہرآباد سے پوسٹمارٹم کرایا اور جائے واردات سے تمام شواہد اکھٹے کرنے کے بعد نعشیں تدفین کیلئے ورثاء کے حوالے کردیں ۔تھانہ سٹی جوہرآباد میں ملزمہ گلناز کے خلاف مقتول محمد اجمل کے بھائی محمد اکرم کی مدعیت میں زیر دفعہ 302ت پ مقدمہ درج کرلیاگیا اورتفتیش شروع کردی گئی ہے مقتول محمد اجمل پدھراڑ کا رہائشی تھا اور جوہرآباد میں رکشہ چلاتا تھا ۔اس کی شادی 2007میں گلناز کے ساتھ ہوئی تھی میاں بیوی کے مابین اکثر جھگڑا ہوتا رہتا تھا بدھ کی صبح جب محمد اجمل اپنے بیٹوں اور بیٹیوں کے ہمراہ سویا ہوا تھا تو ملزمہ نے کلہاڑیوں اور چھریوں کے پہ در پہ وارکرکے انھیں قتل کردیااور خود تھانہ سٹی جوہرآباد جاکر گرفتاری دیدی ۔ 5افراد کے بہیمانہ قتل کی سنگین واردات کی اطلاع ملتے ہی لوگوں کا جم غفیر ان کے گھر کے سامنے اکٹھا ہوگیا۔ ایس ایچ او جوہرآباد منیر احمد کے مطابق قتل کی یہ المناک واردات گھریلو جھگڑوں کاشاخسانہ ہے تاہم پولیس 5افراد کے قتل کی اس واردات کی ہر پہلو پر تفتیش کررہی ہے ۔

قتل

مزید : علاقائی