تحصیل ثمرباغ میں جماعت اسلامی کو دھچکہ،اہم سیاسی رہنماء پی ٹی آئی میں شامل

تحصیل ثمرباغ میں جماعت اسلامی کو دھچکہ،اہم سیاسی رہنماء پی ٹی آئی میں شامل

جندول(نمائندہ پاکستان) تحصیل ثمرباغ میں جماعت اسلامی کو دھچکہ ، نائب ناظم قلعہ کامبٹ ملک نوشاد خان نے خاندان رشتہ داروں اور تین سو ساتھیوں ، معروف عالم دین و مہتمم مسجد ڈنڈونوں مولانا عبید اللہ نے بھی پچاس ساتھیوں اور سابق ایم پی اے اعزاز الملک افکاری کے آبائی علاقہ جانمیا نے متفقہ طور پرجماعت اسلامی کیساتھ پچاس سالہ قربت ختم کرتے ہوئے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کر دیا ۔ انجینئر اسماعیل کی ذیر صدارت شمولیتی تقاریب کے دوران مقامی لوگوں نے کہا کہ انہوں نے جماعت اسلامی کو ووٹ اسلام اور تعمیر و ترقی کیلئے دیا تھامگر نہ اسلامی حکومت قائم اور نہ عوامی مسائل حل ہوئے بلکہ مسائل میں اضافہ ہوا نہوں نے کہا کہ مذکورہ علاقہ کے لوگ پینے اور دیگر ضروریات کیلئے پانی گاڑیوں اور سروں پر لادھ کر لانے پر مجبور ہیں ،بجلی موجود نہیں ، تعلیم اور صحت کا برا حال ہے، ملازمتیں سفارش پر ہیں ،ترقیاتی کاموں میں مخصوص افراد کو نوازاں جاتا ہے ، روڈ کھنڈرات میں تبدیل ہے اس لئے مقامی لوگوں نے مشاورت کر کے تحریک انصاف کو چن لیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے ضلعی صدر و امیدوار NA7محمد بشیر خان نے کہا کہ آنے والا دور تحریک انصاف کا ہے انہوں نے کہا کہ ہماری توجہ کا مرکز تعلیم ہوگا اس کے علاوہ تین ماہ کے اندر اندر علاقہ میں بجلی مسائل ختم کرکے صنعتی ترقی اور روزگار کیلئے راہ ہموار کرینگے اور ہر گھر تک صاف پانی کی فراہمی یقینی بنانے سمیت دیگر ضروری کام کرینگے ۔ تقریب کے حلقہ PK16کے امیدوار سربلند خان ،PK17کے امیدوار ملک لیاقت علی خان و دیگر نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے تمام قائدین ایک پیج پر ہیں اور اس بار دیگر جماعتیں اپنے وقت پیسہ اور توانائی ضائع نہ کریں اس لئے کہ عوام نے اپنا اچھا اور برا سمجھ لیا ہے انہوں نے کہا کہ ہم ایسا نظام دینگے جس میں ترقیاتی کاموں پر سو فیصد رقم خرچ ہو گی اور کسی کو کمیشن کھانے بھی نہیں دینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر