پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیسوں کا معاملہ:سپریم کورٹ نے میڈیکل کالجز کو تاحکم ثانی داخلوں اور اشتہارات سے روک دیا

پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیسوں کا معاملہ:سپریم کورٹ نے میڈیکل کالجز کو تاحکم ...
پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیسوں کا معاملہ:سپریم کورٹ نے میڈیکل کالجز کو تاحکم ثانی داخلوں اور اشتہارات سے روک دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)نجی پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیسوں کے معاملے پر کیس کی سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ آف پاکستان نے پرائیوٹ میڈیکل کالجز کو تاحکم ثانی داخلوں اور اشتہارات سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق نجی پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیسوں کے معاملے پر کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی ۔چیف جسٹس آف پاکستان میاں محمد ثاقب نثار نے کیس کی سماعت کی ۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ ہم نے کالجز کی فیس ساڑھے 8لاکھ روپے مقرر کی ہے اس سے ایک پیسہ میں زائد نہیں لینے دیں گے،ساڑھے آٹھ لاکھ روپے فیس میں کھانے اور رہائش کے اخراجات شامل نہیں ہیں،کالج 34لاکھ روپے تک وصول کر کے والدین کا استحصال کر رہے ہیں۔چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ کس موٹر سائیکل پر سامان رکھ کر لایا جاتا ہے سب معلوم ہے اور کس طرح انسپیکشن ہوتی تصاویر سمیت تمام معلومات آتی ہے ،ہم معیاری ڈاکٹرز بنانا چاہتے ہیں ،میڈیکل کالجز میں داخلے کے موجودہ نظام میں خرابیاں ہیں اور ہمیں ایڈمن سسٹم کو سینٹر لائز کرنا ہے ،عدالت کسی بھی وجہ سے مقدمے کی سماعت ملتوی نہیں کرے گی۔سپریم کورٹ آف پاکستان نے پرائیوٹ میڈیکل کالجز کو تاحکم ثانی داخلوں اور اشتہارات سے روک دیااورحکم دیا کہ یونیفارم پالیسی بننے تک داخلے بند رہیں گے۔

مزید : قومی /جرم و انصاف /علاقائی /اسلام آباد