ایف آئی اے کیس الیکشن متنازعہ بنانے کی کوشش ،پارٹی منشور کے مطابق کام کرنے والوں سے اتحاد ہو سکتا ہے:بلاول بھٹوزرداری

ایف آئی اے کیس الیکشن متنازعہ بنانے کی کوشش ،پارٹی منشور کے مطابق کام کرنے ...
ایف آئی اے کیس الیکشن متنازعہ بنانے کی کوشش ،پارٹی منشور کے مطابق کام کرنے والوں سے اتحاد ہو سکتا ہے:بلاول بھٹوزرداری

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو  زرداری نے کہا ہے کہ آصف زرداری تمام مقدمات میں عدالتوں میں پیش ہوئے ہیں،ایف آئی اے کا کیس الیکشن کومتنازعہ بنانے کی کوشش ہے،جو بھی پی پی منشور کے مطابق کام کرے گا اس سے اتحاد ہوسکتا ہے،پی پی نے جمہوریت کے لیے جتنی قربانیاں دی ہیں اتنی کسی سیاسی پارٹی نے نہیں دیں،پاکستان میں عام آدمی کے لئے الیکشن لڑنا مشکل بنادیا گیا ہے، ہمیں اس کلچر کو ختم کرنا ہوگا۔

نجی ٹی وی کے مطابق بلا ول بھٹو زرداری نے کہا کہ آصف زرداری کے خلاف جعلی کیس بنایا گیا ہے ،آصف زرداری نے 20 سال مقدمات کا سامنا کیااور عدالتوں میں پیش ہوئے، آصف زرداری پر لگائے گئے الزامات کبھی ثابت نہیں ہوئے لیکن اب وفاقی تحقیقاتی ادارے نے پھر کیس اوپن کردیا ہے،ایف آئی اے کا کیس الیکشن کومتنازعہ بنانے کی کوشش ہے.انہوں نے کہا کہ جو بھی پی پی منشور کے مطابق کام کرے گا اس سے اتحاد ہوسکتا ہے،جس پارٹی سے اپنے منشور کے مطابق مطمئن ہوں گا اس کی حکومت بنانے میں مدد کروں گا تاہم  اگر کوئی پارٹی ہمارے منشور کے مطابق کام نہیں کرے گی تو اپوزیشن میں بیٹھ جاؤں گا۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ پی پی نے جمہوریت کے لیے جتنی قربانیاں دی ہیں اتنی کسی سیاسی پارٹی نہیں دیں،تاہم عوام سو فیصد ہم سے خوش نہیں ہیں اور نہ ہوں گے، ان کو ہم سے سوال کرنے کا حق ہے، میں پیپلزپارٹی کو نظریے کے مطابق چلا رہا ہوں اور پارلیمنٹ میں جاکر مسائل پر آواز اٹھانا چاہتا ہوں،پارٹی کے فیصلے میں اور آصف علی زرداری مل کر کرتے ہیں اور ویسے بھی جمہوری جماعتوں میں ہمیشہ مل کر فیصلے کیے جاتے ہیں، صرف باپ بیٹے ہی نہیں باقی رہنماؤں کو بھی بلا کر پارٹی میں فیصلے کرتے ہیں۔

انہوں نے تسلیم کیا کہ  رسک لے کر کمپین چلارہے ہیں کیونکہ اس کے علاوہ کوئی طریقہ نہیں ہے،دہشت گردی کی وجہ سے ہماری الیکشن کمپین کو کافی نقصان پہنچا ہے، ہمیں سندھ تک محدود رکھنے کی سازش کی جارہی ہے لیکن رکاوٹوں کے باوجود ہمیں جو رسپانس مل رہا ہے وہ سب کے سامنے ہے، سیکیورٹی کو جتنا فول پروف بناسکتے ہیں بنارہے ہیں،ہمارے الیکشن کو متنازعہ بنایا جارہا ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ گزشتہ دو ادوار میں ہمارے وزرائے اعلی نے جو کام کیے وہ اب تک کسی نے نہیں کیے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے محدود وسائل کے باوجود بہت کام کیے لیکن ابھی بہت کچھ کرنا ہے اور میں ایک دن میں سب کچھ ٹھیک نہیں کرسکتا ہوں۔ پیلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہمیں معاشی انصاف کی ضرورت ہے اور مجھ جیسے صاحب حیثیت افراد کو معاشرے کے لیے کچھ زیادہ خرچ کرنا چاہیے، نوجوانوں کو سیاست میں نہیں بلکہ معشیت میں مواقع دیئے جانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ امیروں کو مزید امیر کرنے سے روزگار نہیں بڑھتا, شہباز شریف اور عمران خان کبھی بے روزگار اور بھوکے نہیں رہے .

مزید : قومی