چیئر مین سینیٹ کیلئے حاصل بزنجوکے نام پر اتفاق ہو چکا ہے، میا ں افتخار

چیئر مین سینیٹ کیلئے حاصل بزنجوکے نام پر اتفاق ہو چکا ہے، میا ں افتخار

پشاور(سٹی رپورٹر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ تمام اپوزیشن جماعتیں چیئرمین سینیٹ کیلئے حاصل بزنجو کے نام پر متفق ہو گئی ہیں،اور موجودہ چیئرمین کا نشہ اتارنے کیلئے تبدیلی ضروری ہو گئی تھی، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں رہبر کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ اجلاس میں تین نکات پر گفتگو ہوئی کہ چیئرمیں سینیٹ کیلئے مسلم لیگ ن کی جانب سے نام دیا جائے کیونکہ وہ بڑی اکثریتی جماعت ہے، دوسرا پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ کی باہمی رضامندی سے نام سامنے لایا جائے اور تیستا نکتہ یہ کہ ایسا امیدوار ہو جس پر تمام اپوزیشن جماعتیں متفق ہوئیں لہٰزا اسی کی روشنی میں حاصسل بزنجو کے نام پر اتفاق دیکھنے میں آیا، اسفندیار ولی خان نے سب سے پہلے حاصل بزنجو کے نام پر اتفاق کیا،جس کے بعد پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور مریم نواز کے درمیان بھی تفصیلی گفتگو ہوئی اور نواز شریف نے بھی حاصل بزنجو کے نام پر اتفاق کیا، انہوں نے کہا کہ مستقبل میں انتہائی کٹھن حالات پیدا ہونے جا رہے ہیں جس کی وجہ سے حاصل بزنجو بڑے دل والے ہیں اور مشکل صورتحال میں دباؤ برداشت کرنے کا مادہ موجود ہے اور، بلوچستان کو اس کے حق سے محروم نہیں کیا جانا چاہئے، میاں افتخار حسین نے کہا کہ اسفندیار ولی خان کی جانب سے چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے اور25جولائی کو ملک گیر یوم سیاہ منانے کی تجاویز دیں جسے اے پی سی اور رہبر کمیٹی میں متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا، انہوں نے کہا کہ موجودہ چیئرمین سینیٹ حکومت کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں لہٰذا اب انہیں گھر بھیجنا ضروری ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 25جولائی کو ملک بھر کے تمام بڑے شہروں میں حکومت مخالف تحریک کا آغاز ہونے جا رہا ہے جس کا دائرہ دیگر شہروں تک بھی بڑھایا جائے گا، انہوں نے کہا کہ حکومت عوامی رائے کے نتیجے میں اقتدار میں نہیں آئی اسی لئے سلیکٹڈ وزیر اعظم کو عوامی مسائل کا ادراک نہیں ہو سکتا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...