موسلادھار  بارش سے نشیبی علاقے زیر آب کئی علاقوں کی بجلی بند

  موسلادھار  بارش سے نشیبی علاقے زیر آب کئی علاقوں کی بجلی بند

لاہور (لیڈی رپورٹر+سٹی رپورٹر)شہر بھر میں ہونے والی موسلا دھار بارش سے شہر کے نشیبی علاقے زیر آب آگئے اور سڑکوں پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہونے سے ٹریفک کی آمد ورفت بھی شدید متاثر رہی دوسر جانب لیسکو کے کئی فیڈرز بھی ٹرپ کر گئے۔ تفصیلات کے مطابق نشیبی علاقوں کے مکینوں کیلئے بارش رحمت کی بجائے زحمت بن گئی،پانی کھڑا ہونے سے متعلقہ ا داروں کی کار کر دگی کھل کر سامنے آگئی۔ چوبر جی، ساندہ، راجگڑھ، اسلامپورہ، سنت نگر،بلال گنج، موہنی روڈ، دہلی گیٹ،یکی گیٹ، دوموریا پل، سرکلر روڈ،گڑھی شاہو، لکشمی چوک، شاہ جمال اور مسلم ٹاؤن سمیت کئی نشیبی علاقے میں 2,2فٹ پانی کھڑا ہو گیا جس کے بعد شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پرا۔ریلوے اسٹیشن اور میٹرو بس اسٹیشن میں بھی پانی جمع ہوگیا جبکہ بارش کا آغاز ہوتے ہی ل، شہر کے متعدد علاقوں میں بجلی کی فراہمی بھی معطل رہی  اور کئی علاقوں میں تارٹوٹنے کے واقعات بھی پیش آئے علاوہ ازیں محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 24 گھنٹوں میں شہر بھر میں مزید بارشوں کا امکاں ہے۔ اس حوالے سے روزنامہ ”پاکستان“ کے نمائندے سے گفتگو کر تے ہوئے محمد احسن، کامران احمد،اویس آصف، جنید ایوب، ارشد خان، عبدالرحمن اور کاشف مغل سمیت دیگر شہریوں کا کہنا تھا کہ جب بھی لاہور میں بارش ہو تو جگہ جگہ کئی کئی فٹ پانی جمع ہو جاتا ہے جس کی وجہ سے شہری گھروں میں محصور ہو کر رہ جاتے ہیں۔ ہمیں ضروریات زندگی کی اشیاء خریدنے کیلئے گھر سے باہر جانا پڑے توشدید مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور اگر بارش زیادہ ہو جائے تو گھر تک میں داخل ہو جاتا ہے۔ واسا اور ضلعی انتظامیہ مکمل طور پر ناکام ہو گئی ہے اور ان کی کارکر دگی صفر ہے۔ شہریوں کا مزید کہنا تھا کہ میٹرو ٹرین کے کام کی وجہ سے سڑکوں کا جو حال ہو گیا ہے اس نے ان مشکلات میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔ جگہ جگہ کھلے گٹر اور بڑے بڑے گڑھوں سے ٹریفک بھی شدید متاثر ہوتی ہے اور مو ٹر سائیکل سمیت دیگر سواریوں کا بھی براحال ہو جاتا ہے۔ یہ تمام چیزیں حکومت کی کارکر دگی پر سوالیہ نشان ہیں۔ حکومت کو چاہئے کہ نکا سی آب کے نظام کو بہتر کرے تا کہ لوگوں کو کم سے کم کسی جگہ سے تو سکوں میسر ہو۔ 

مزید : میٹروپولیٹن 1