اگلی حکومت پیپلز پارٹی ہو گی ، این آر او کی اپوزیشن کو ضرورت نہیں ، عمران خان کو ہے : بلا ول بھٹو زرداری

  اگلی حکومت پیپلز پارٹی ہو گی ، این آر او کی اپوزیشن کو ضرورت نہیں ، عمران ...

سکھر(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں )پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہاہے جولوگ کہتے ہیں آپ نے میٹرو بنایا نہ سونامی لائے وہ د یکھ لیں پیپلزپارٹی لوگوں کو پیروں پر کھڑا کرتی ہے ،سندھ حکومت پیپلزپارٹی کا یہ پروگرام عوام کی کامیابی ہے، پیپلزپارٹی نے لوگوں کو کے پی کے اورسندھ سمیت ہرجگہ لوگوں کو پیروں پر کھڑا کیا ،ذوالفقار علی بھٹو نے عوام کو روزگار دیا،انہیں روزگار کےلئے بیرون ملک بھیجا، گھوٹکی کی خواتین کو باعزت روزگار فراہم کریں گے، آئندہ حکومت پیپلزپارٹی کی ہوگی ،حکومت میں آنے کے بعد ملک بھر کی خواتین کو باعزت روزگار دیں گے، خواتین لوکل گورنمنٹ کےساتھ مل کر کام کریں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر میں خواتین کے اعزاز میں منعقد ایک پروقار تقریب سے خطاب کے دوران کیا ،خطاب کے دوران انہوں نے وزیر بلدیات کو تمام نمائندوں کو خواتین سے مل کر کام کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا خواتین کو مسائل کا بہتر اندازہ ہے، منتخب بلدیاتی نمائندے خواتین سے تجاویز لے کر بلدیاتی نظام میں بہتری لائیں ، جب تک عوام ساتھ ہے تب تک ہ میں کوئی نہیں روک سکتا، عوام کی مدد سے ان قوتوں کا مقابلہ کریں گے جو روزگار دینے کا وعدہ کرکے روز گا ر چھین رہی ہے، ان قوتوں سے مقابلہ کریں گے جو پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ کرکے گھر گرانے پر تلے ہیں ، عوام کے مسائل پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، پیپلز پارٹی ریڈکشن پروگرام سندھ حکومت کی نہیں عوام کی کامیابی ہے، جو کہتے ہیں پیپلز پارٹی نے کیا کیا یہ خواتین انکے سوال کا جواب ہیں ۔ پیپلز پاورٹی ریڈکشن پروگرام کے تحت یہ خواتین آج اپنے پیروں پر کھڑی ہیں ، آمریت کی پیداوار حکومتیں باہر سے پیسے لے کر پروگرام چلاتی ہیں ، کامیاب پروگرام کو دیکھ کر عالمی اداروں نے تعاون کیا فنڈز دیئے ، آئی ایم ایف کہتا ہے ہم بےنظیر سپورٹ پروگرام کو ختم نہیں کریں گے ، مگر موجودہ حکومت نے بےنظیر انکم سپورٹ پروگرام کو بدل کر احساس پروگرام شروع کردیا، جن لوگوں کو احساس نہیں وہ کہاں سے پروگرام چلا سکیں گے، آج تک دس لاکھ گھرانوں کو آرگنائز کیا ہے، ایک لاکھ اسی ہزار لوگوں کو بلاسود قرضے دیئے ہیں ،خواتین پاکستان کی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں ۔ بعدازاں میڈیا سے گفتگو میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کا کہنا تھا عمران خان اپنی حکومت کیلئے پلی بارگین مانگتے رہتے ہیں ۔ این آر او کی ضرورت اپوزیشن کو نہیں ، ان کو ہے ۔ کسی بھی اپوزیشن ممبر نے این آر او یا پیسے دینے کی بات نہیں کی لیکن عمران خان ہر دفعہ یہ بات کرتے ہیں ۔ مڈٹرم الیکشن کا مطالبہ کرنے سے پہلے الیکشن ریفارمز کرنی چاہیے، اگر الیکشن ریفارمز کے بغیر الیکشن ہوگا تو فائدہ نہیں ہوگا ۔ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت کا ساتھ دیا ۔ شہیدوں کے خون سے سودے بازی نہیں کرونگا ۔ امید کرتا ہوں حاصل بزنجو چیئرمین سینیٹ منتخب ہو جائیں گے ۔ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو اخلاقی طور پر مستعفی ہو جانا چاہیے ۔ نیا چیئرمین سینیٹ اتفاق رائے سے لانا اپوزیشن کا حق ہے ۔ حکومت نے اگر سینیٹ الیکشن میں دھونس اور دھاندلی کی کوشش کی تو بے نقاب کریں گے ۔

بلاول بھٹو

مزید : صفحہ اول


loading...