پالیسی تبدیل کر کے تاجروں کے تحفظات دور کئے جائیں: لاہور چیمبر 

پالیسی تبدیل کر کے تاجروں کے تحفظات دور کئے جائیں: لاہور چیمبر 

لاہور(نیوز رپورٹر) لاہور چیمبر کے قائم مقام صدر خواجہ شہزاد ناصر اور نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے حکومت پر زور دیا ہے کہ پالیسیوں میں ترامیم کے ذریعے تاجر برادری کے تحفظات دور کرے تاکہ ملک کی معاشی حالت بہترہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکسوں کے پیچیدہ اور ناقابل قبول نظام، زیادہ پیداواری لاگت، غیرموافق کاروباری ماحول اور دیگر بہت سے مسائل کی وجہ سے معیشت سکڑ رہی ہے، انڈسٹری اور تجارت بند ہورہی ہے، حکومت کو ایسی پالیسیاں وضع اور موجودہ پالیسیوں میں ترامیم کرے جو کاروبار دوست ماحول پیدا کریں اور صنعت و تجارت کے فروغ میں مددگار ثابت ہوں۔ لاہور چیمبر کے عہدیداروں نے کہا کہ دنیا کے کئی ممالک نے پسماندگی سے نکل کر معاشی استحکام حاصل کیا، پاکستان میں بھی معاشی لیڈر بننے کے لیے تمام وسائل موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت کچھ اہم معاملات پر توجہ دے تو معاشی مسائل پر قابو پایا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے سولہ سو آئٹمز پر ڈیوٹی زیرو کی لیکن دوسری طرف تین ہزار آئٹمز پر ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹی عائد کردی جس کی وجہ سے مصنوعات مہنگی اور مقامی صارفین کے مسائل میں اضافہ ہوا، یہ ڈیوٹی واپس لی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ایکسپورٹ سے وابستہ سیکٹرز کے لیے زیر وریٹنگ کی سہولت کے خاتمے سے برآمدی شعبہ کے لیے بہت سے مسائل پیدا ہوئے ہیں، حکومت کو اس فیصلے پر نظر ثانی کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ خریداروں کے قومی شناختی کارڈ کی شرط تاجروں کے لیے بہت سے مسائل کا سبب بنے گی، حکومت اگر ایسے اقدامات اٹھانا بھی چاہتی ہے تو مرحلہ وار اٹھائے۔ خواجہ شہزاد ناصر اور فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ حکومت مارک اپ ریٹ کم کرے کیونکہ اس کی بلند شر ح نے نجی شعبہ کیلئے قرضوں کا حصول مشکل بنا دیا ہے، جس سے سرمایہ کاری میں بھی کمی آئی ہے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ تمام خام مال پر ڈیوٹی کی شرح کم سے کم کرے جس سے صنعتوں کی پیداواری لاگت میں کمی آئے گی اور سمگلنگ کی حوصلہ شکنی بھی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ معیشت تب تک ترقی نہیں کرسکتی جب تک حکومت اور تاجر برادری کے درمیان اعتماد سازی نہ ہو لہذا حکومت تاجروں کے حقیقی مسائل فوری طور پر حل کرے۔ 

مزید : کامرس


loading...