پاکستان میں بھی یوم آبادی کاعالمی دن منایاگیا

    پاکستان میں بھی یوم آبادی کاعالمی دن منایاگیا

کراچی(خصوصی رپورٹ )دنیا بھرکی طرح 11جولائی کو پاکستان میں بھی یوم آبادی کاعالمی دن منایاگیا ۔ اس دن کو منانے کا آغاز سال1989سے اقوام متحدہ کی جانب سے کیا گیا جس کا مقصد دنیا میں بڑھتی ہوئی آبادی اور اس سے متعلق مسائل کے حوالے سے شعور پیدا کرنا تھا ۔ اقوام متحدہ کے مطابق دنیا بھر کی آبادی اس وقت 7 ارب 53 کروڑ ہے جبکہ سال2100 تک یہ 11 ارب 20 کروڑ ہوجائے گی ۔ آبادی کے لحاظ سے چین اور بھارت دنیا کے دو بڑے ممالک ہیں ۔ ان دونوں ممالک کی آبادی ایک، ایک ارب سے زائد ہے اور یہ دنیا کی کل آبادی کا 37 فیصد حصہ ہے ۔ ماہرین کے مطابق بڑھتی ہوئی آبادی کے ساتھ ماحولیاتی تبدیلیاں ، خوراک، انفرا اسٹرکچر اور دیگر مسائل ہنگامی طور پر حل طلب ہیں ۔ ایک محتاط اندازے کے مطابق ہر سال دنیا کی آبادی میں سوا 8 کروڑ افراد کا اضافہ ہوجاتا ہے ۔ سال2030 تک آبادی میں مزید ایک ارب کا اضافہ متوقع ہے ۔ اس صدی کے اختتام یعنی سال2100 تک دنیا کی آبادی 11 ارب 20 کروڑ ہوجائے گی ۔ سال2050 تک دنیا بھر کی آبادی کا 50 فیصد ان 9 ممالک امریکا، انڈونیشیا، بھارت، پاکستان، ناءجیریا، کانگو، ایتھوپیا، تنزانیہ، یوگنڈا میں ہوگا ۔ فی الوقت چین کی ;200;بادی 1 ارب 38 کروڑ ہے جبکہ بھارت کی آبادی 1 ارب 33 کروڑ ہے تاہم اگلے برس تک بھارت اس ضمن میں چین کو پیچھے چھوڑ دے گا ۔ اس وقت پیدائش کی شرح سب سے کم یورپ جبکہ سب سے زیادہ افریقہ میں ہے ۔ سال2050 تک افریقی ملک نائیجریا آبادی کے لحاظ سے تیسرا بڑا ملک بن جائے گا ۔ پاکستان میں اس وقت 21کروڑ آبادی موجود ہے جو سال2030تک بڑھ کر ساڑھے 24 کروڑ ہوجائے گی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر