خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے مواصلات و تعمیرات کا ایک اجلاس

خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے مواصلات و تعمیرات کا ایک اجلاس

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے مواصلات و تعمیرات کا ایک اجلاس جمعرات کے روز رکن صوبائی اسمبلی اور کمیٹی کے چیئر مین ظاہر شاہ طورو کی زیر صدارت پشاور میں منعقد ہوا۔ جسمیں صوبائی وزیر مواصلات اکبر ایوب خان سمیت کمیٹی کے اراکین اور ممبران صوبائی اسمبلی شفیع اللہ، محمد اعظم خان، شرافت علی، میاں نثار گل، بہادر خان اور محمد ادریس، سیکرٹری مواصلات شہاب خٹک اور متعلقہ افسران نے شرکت کی۔ کمیٹی کو سیکرٹری مواصلات و تعمیرات نے سڑکو ں اور پلوں کے آئندہ دس سالوں کے منصوبوں کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔ اجلاس کو بتاگیا کہ صوبے میں 15711 کلومیٹر روڈ محکمہ مواصلات کے ذریعے تعمیر کئے گئے ہیں جبکہ آئندہ دس سالوں کے اندر نئے روڈز کی تعمیر کے ساتھ ساتھ پرانے روڈز اور پلوں کی تعمیر و مرمت پر خصوصی توجہ دی جائیگی۔اجلاس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ نئے روڈوں کی تعمیر کیلئے مختلف امور مثلاً آبادی نئے علاقوں کی ترقی، بڑھتی ہوئی ٹریفک، علاقے میں بڑھتی ہوئی اقتصادی سرگرمیوں اورسیاحت کے حوالے سے مستقبل کیلئے بہترمنصوبہ بندی کی جائے۔کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ سوات ایکسپریس وے، نظام پور روڈ اور سنٹرل جیل پشاور میں نئی زیر تعمیر بلڈنگ کا معائنہ کیا جائیگا۔کمیٹی کو مزیدبتا یا گیا کہ صوبے میں 72 نئے سکولوں کو جدید طرز پر تعمیر کیا گیا ہے۔ چیئرمین کمیٹی نے منسٹریل اور ٹیکنکل سٹاف کی تعنیاتی و تبدیلی Esta Code کے مطابق کرنے کی ہدایت کی تا کہ شفافیت کے عمل کو آگے بڑھایا جا سکے۔انہوں نے عمران خان کے وژن کے مطابق C&W ڈیپارٹمنٹ سے کرپشن کے خاتمے کیلئے ہر سطح پر اقدامات اٹھائے جانے پر بھی زوردیا تا کہ کرپشن کی بیماری کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا جائے۔ انہوں نے صوبائی وزیر برائے مواصلات و تعمیرات اکبر ایوب کی جانب سے محکمہ سے کرپشن کو ختم کرنے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کو سراہا۔سیکرٹری مواصلات و تعمیرات نے محکمہ میں شفافیت لانے کیلئے E-Bidding سسٹم، تیسری پارٹی کی توسیع، حاضری کیلئے بائیو میٹرک نظام، مارکیٹ ریٹ سسٹم اور ڈیپارٹمنٹ کی Re-Structuring کیلئے کی جانے والی اقدامات سے کمیٹی کو آگاہ کیا۔

مزید : صفحہ اول