نیب کا حلیم عادل شیخ کیخلاف گھیرا تنگ،اراضی قبضہ سکینڈل میں تحقیقات شروع

  نیب کا حلیم عادل شیخ کیخلاف گھیرا تنگ،اراضی قبضہ سکینڈل میں تحقیقات شروع

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) اینٹی کرپشن کے بعد نیب نے بھی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سندھ کے سینئر رہنما اور ایم پی اے حلیم عادل شیخ کیخلاف گھیرا تنگ کر دیا۔ ان کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ انہوں نے ملیر کی 257 ایکڑ زمین پر قبضہ کیا اور بعد میں بیچ دی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما حلیم عادل شیخ کیخلاف نیب نے تحقیقات شروع کر دی ہے، زمینوں پر قبضے اور فروخت کے بعد قومی احتساب بیورو نے ڈپٹی کمشنر ملیر سے مکمل تفصیلات طلب کرلی ہیں۔نیب نے ڈپٹی کمشنر ملیر کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر ملیر تمام متعلقہ کاغذات 27 جولائی تک نیب میں جمع کروائے۔ پی ٹی آئی رہنما پر سرکاری زمین پر قبضے اور غیر قانونی فروخت کا الزام ہے، نیب خط میں تمام زمینوں کا رقبہ اور پیمائش کا ذکر بھی کیا گیا ہے جبکہ ان پر مبینہ منی لانڈرنگ کا بھی الزام ہے۔یاد رہے اینٹی کرپشن ایسٹ نے گز شتہ سال چیف سیکریٹری سے مقدمہ درج کرنے کی اجازت لی تھی اینٹی کرپشن کی رپورٹ میں زمین پر قبضے، فروخت میں حلیم عادل شیخ کو ملز م قرار دیا گیا تھا، اْدھر رد عمل دیتے ہوئے رہنما تحریک انصاف حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ مجھے نیب کا کوئی نوٹس نہیں ملا، جن زمینوں کی بات کی گئی انکی تمام دستاویزات کلیئر ہیں۔

حلیم عادل شیخ

مزید :

صفحہ آخر -