افغانستان میں دھماکہ،خواتین اور بچے جاں بحق

افغانستان میں دھماکہ،خواتین اور بچے جاں بحق
افغانستان میں دھماکہ،خواتین اور بچے جاں بحق

  

کابل(ڈیلی پاکستان آن لائن)افغانستان میں امن و امان کی صورتحال بہتر نہ ہوسکی اور شہری علاقوں میں بم دھماکوں کا سلسلہ جاری ہے۔  تازہ ترین  بم دھماکے میں خواتین اور بچوں سمیت 6عام شہری جاں بحق ہوگئے ہیں۔

امریکی خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق بم دھماکے کا تازہ واقعہ افغانستان کے صوبہ غزنی میں پیش آیا ہے جہاں ضع جاگاتو میں  مسافروں سے بھری ایک وین  سڑک کنارے نصب ایک بم سے ٹکرا گئی۔ صوبائی گورنرکے ترجمان وحید اللہ نے بتایا ہے کہ واقعے میں آٹھ شہری زخمی بھی ہوئے ہیں۔

تاحال کسی تنظیم کی جانب سے بم دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق جمعہ کو بھی  اسی صوبے میں طالبان کے ایک حملے میں سڑک کے کنارے نصب بم کے ذریعے ضلع ڈیاک میں پولیس سربراہ اور ان کے دو محافظوں کو نشانہ بنانے کے لیے افغان چیک پوسٹ پر حملہ ہوا۔

اس کے علاوہ وزارت دفاع نے کہا کہ افغان فوجیوں نے مشرقی صوبہ لوگر کے ضلع عذرا میں فوجی چوکیوں پر جمعہ کے روز طالبان کے حملوں کو پسپا کردیا۔

بیان میں کہا گیا کہ حملے میں کم از کم 8 طالبان ہلاک اور 4 زخمی ہوگئے۔

واضح رہے کہ تقریباً 19 برس تک طالبان سے جنگ کے بعد امریکا، افغانستان سے انخلا، امریکی حمایت یافتہ حکومت اور ملک کے مختلف حصوں پر قابض جنگجو گروہ کے درمیان امن کے حصول کی کوششوں کے طریقوں پر غور کر رہا ہے۔

رواں سال 29 فروری کو امریکا اور طالبان کے درمیان معاہدہ ہوا تھا جس میں امریکی فوجیوں کے انخلا کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

امریکی عہدیداران اور نیٹو نے مئی کے اواخر میں کہا تھا کہ اس وقت کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے سبب طالبان سے اتفاق کردہ شیڈول سے قبل افغانستان میں امریکی فوجیوں کی تعداد 8 ہزار 600 کے قریب ہے۔

یاد رہے کہ معاہدے پر دستخط کے بعد سے طالبان امریکا پر جیت کا دعویٰ کر رہے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -