شنگھائی تعاون تنظیم میں پاک بھارت شمولیت تنظیم کی پہلی وسعت ہے، چین

شنگھائی تعاون تنظیم میں پاک بھارت شمولیت تنظیم کی پہلی وسعت ہے، چین

بیجنگ (آ ئی این پی ) چینی وزیر خارجہ وانگ ای نے شنگھائی تعاون تنظیم میں پاکستان اور بھارت کی باضابطہ شمولیت کو تنظیم کی پہلی وسعت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاک بھارت شمولیت سے تنظیم کے اثرات اور باہمی تعاون کی گنجائش میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ چینی صدر شی جن پنگ کی شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس میں شرکت کے حوا لے سے انٹرویو میں چینی وزیر خارجہ وانگ ای نے کہا کہ اس دورے کے ذریعے چین اور قازقستان کے تعلقات کو ایک نئی بلندی تک پہنچایا گیا ہے۔دونوں ملکوں نے مشترکہ اعلامہ جاری کیا جس میں دو طرفہ تعلقات کی ترقی کی سمت کا تعین کیا گیا ہے۔شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس کا ذکر کرتے ہوئے چینی وزیر خارجہ نے کہا کہ چینی صدر نے پانچویں مرتبہ مذکورہ اجلاس میں شرکت کی ہے ۔ شی جن پنگ نے متعلقہ ملکوں کے رہنماوں کے ساتھ تنظیم کے امور اور اہم بین الاقوامی و علاقائی معاملات پر وسیع تبادلہ خیال کیا اور اس ضمن میں چین کا فارمولا پیش کیا۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ موجودہ اجلاس کے دوران تنظیم میں پاکستان اور بھارت کی باضابطہ شمولیت کی منظوری دی گئی۔چین کے پیش کردہ دی بیلٹ انڈ روڈ انیشیٹو کو قازقستان اور تنظیم کے دوسرے اراکین کی جانب سے بھر پور حمایت حاصل ہوئی۔چین اور قازقستان کے مشترکہ اعلامیہ اور شنگھائی تعاون تنظیم کے آستانہ بیان میں دی بیلٹ اینڈ روڈ کے تحت کثیرالطرفہ تعاون اورعلاقائیاور عالمی اقتصادی ترقی پر پڑنے والے اثرات کو بھر پور سراہا گیا۔متعلقہ فریقوں نے دی بیلٹ اینڈ روڈ کی تعمیر میں مکمل شرکت کی خواہش ظاہر کی ہے۔

چین

مزید : صفحہ آخر