جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینے والے اڈیالہ جیل خانے کی تیاری کریں: سراج الحق

جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینے والے اڈیالہ جیل خانے کی تیاری کریں: سراج الحق

لاہور (صباح نیوز)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینے والے اڈیالہ جیل جانے کی تیاری کریں ۔ جے آئی ٹی کو دھمکیوں سے ثابت ہوگیاہے کہ حکمران مرضی کا فیصلہ چاہتے ہیں ۔ قوم امید کرتی ہے کہ سپریم کورٹ ان دھمکیوں کا سختی سے نوٹس لے گی اور جے آئی ٹی ممبران کو ڈرانے دھمکانے والوں کو کٹہرے میں کھڑا کرے گی ۔ قوم سپریم کورٹ کی پشت پر کھڑی ہے۔ جب تک پانامہ تحقیقات مکمل نہیں ہو جاتیں ، وزیراعظم کو اختیارات کے استعمال سے روکا جائے ۔ وزیراعظم کو اخلاقی جرأت کا مظاہرہ کر تے ہوئے خود ہی مستعفی ہوجاناچاہیے تھا مگر ان کی ڈھٹائی نے ثابت کر دیاہے کہ انھیں ملک و قوم کے وقار کا کوئی خیال نہیں ۔ جنرل باجوہ نے کشمیریوں کی حمایت جاری رکھنے کا دو ٹوک اعلان کر کے قوم کے جذبات کی ترجمانی کی ہے ۔ مودی اپنی حماقتوں سے باز نہ آیا تو ایسا سبق سکھائیں گے کہ اس کی نسلیں یاد رکھیں گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں ملک شاہد اسلم کی طرف سے اپنے اعزاز میں دیے گئے افطار ڈنر کے شرکا ء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ا فطار ڈنر سے لیاقت بلوچ اور جماعت اسلامی لاہور کے امیر ذکر اللہ مجاہد نے بھی خطاب کیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ قوم حکمرانوں کا بے لاگ احتساب چاہتی ہے اور احتساب کے معاملہ میں کسی رکاوٹ کو برداشت نہیں کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ حکمران جان بوجھ کر جے آئی ٹی کو متنازعہ بناناچاہتے ہیں تاکہ جے آئی ٹی کی تحقیقات اور سپریم کورٹ کے فیصلے کو تسلیم نہ کرنے کا جواز پیدا کیا جاسکے ۔ انہوں نے کہاکہ جے آئی ٹی پر دباؤ ڈال کر اپنی مرضی کا فیصلہ لینے کی کوئی حکومتی کوشش کامیاب نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ حکمرانوں کا چہرہ داغدار ہے اور وہ اپنا منہ صاف کرنے کی بجائے آئینہ توڑنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ حکمران ماہ رمضان میں کرپشن سے توبہ کریں اور اللہ اور قوم سے معافی مانگیں ۔

مزید : صفحہ آخر