وزیر اعظم کا جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا قوم پر کوئی احسان نہیں:سراج الحق

وزیر اعظم کا جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا قوم پر کوئی احسان نہیں:سراج الحق
وزیر اعظم کا جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا قوم پر کوئی احسان نہیں:سراج الحق

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کا جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا قوم پر کوئی احسان نہیں،مہذہب معاشرے میں حکمران عدلیہ اور قانون سے بالاتر نہیں ہوتے،ملک آئین و قانون کی بالادستی سے ہی ترقی کرتے ہیں۔

پی ٹی اے نے پاکستان میں بھارتی ویب سائٹس بلاک کر دیں

تفصیلات کے مطابق سراج الحق کا وزیر اعظم کی طرف سے جے آئی ٹی میں پیش ہونے کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وزیر اعظم اور ان کی کابینہ کی طرف سے جے آئی ٹی میں پیش ہونے کے فیصلے کو ایسے پیش کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جیسے وزیراعظم کوئی تاریخی معرکہ سر کرنے جارہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ تاریخ میں بڑے نامور حکمران طلب کرنے پر عدالتوں میں حاضرہوتے رہے ہیں ۔قانون کی بالادستی مہذہب معاشرے کی پہچان ہوتی ہے۔آئین اور قانون کی بالادستی کے بغیر کوئی قوم ترقی نہیں کرسکتی اور جن معاشروں میں آئین کو بالادستی حاصل نہیں ہوتی وہاں انتشار اور انارکی کا راج ہوتا ہے۔

سراج الحق نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ2018ء کے انتخابات سے قبل انتخابی اصلاحات کو یقینی بنا یا جائے اورہمیشہ کی طرح الیکشن کمیشن اس بار بھی انتخابات کی تاریخ کا اعلان ہونے کا انتظار نہ کرے ۔انتخابات سے قبل الیکشن ریفارمز کے نفاذ کویقینی بنایا جائے اور الیکشن میں دولت کی ریل پیل کو ختم کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اربوں روپے خرچ کرکے اسمبلیوں میں پہنچنے والوں نے سیاست کو تجارت بنا لیا ہے اور اقتدار میںآکر وہ کھربوں کماتے ہیں جبکہ انتخابی اصلاحات پر عمل درآمد نہ ہونے سے انتخابات سے عوام کا اعتماد ختم ہو کر رہ گیا ہے۔یہی وجہ ہے کہ انتخابات میں ٹرن آؤٹ مسلسل کم ہورہا ہے۔

مزید : قومی


loading...