کرپشن الزام،سابق ڈی جی نیپرا جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

کرپشن الزام،سابق ڈی جی نیپرا جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج جوادالحسن نے 8 ارب روپے مالیت کی مبینہ کرپشن کے الزام میں گرفتارسابق ڈی جی نیپرا سید انصاف احمدکو25جون تک جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیاہے۔

احتساب عدالت میں نیب نے8ارب کی مبینہ کرپشن کے کیس میں گرفتارنیپراکے سابق ڈی جی سیدانصاف احمدکوجسمانی ریمانڈکے لئے پیش کیا، عدالت کو نیب کے تفتیشی افسر نے بتایا کہ ملزم پر 300 ارب کی مبینہ کرپشن کا الزام ہے،ملزم انصاف احمد نے دانستہ بددیانتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے نشاط چونیاں پاور لمیٹڈ سے ٹھیکہ جات میں بجلی نرخ انتہائی مہنگے داموں مقرر کرکے حکومتی خزانے کو 8 ارب روپے کا نقصان پہنچایا۔

،نشاط چونیاں پاور لمیٹڈ کی جانب سے 2010ء میں 200 میگا واٹ پر مشتمل پاور پلانٹ کی تنصیب کی گئی،ملزمان کی جانب سے 8 ارب روپے کی رقم صرف نشاط چونیاں پاور لمیٹڈ کو غیرقانو ی طور پر منتقل کی گیا،آئی پی پیز کے ساتھ معاہدوں میں اختیارات کے ناجائز استعمال، مبینہ جعلسازی اور دھوکہ دہی سے غیر قانونی ٹیرف مقرر کئے گئے جس کی مد میں اربوں روپے کی زائد رقم آئی پی پیز کو ادا کی گئی۔ملزم کے وکیل نے جسمانی ریمانڈکی مخالفت کی،فاضل جج نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد مذکورہ بالا حکم دے دیاہے۔

مزید :

علاقائی -