ورکرز ویلفیئر بورڈ کے سابق  سیکرٹری کیخلاف مختلف ریفرنسز  کو یکجا کرنے کے احکامات

ورکرز ویلفیئر بورڈ کے سابق  سیکرٹری کیخلاف مختلف ریفرنسز  کو یکجا کرنے کے ...

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس روح الامین اور جسٹس سید افسر شاہ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ورکرز ویلفئیر بورڈ کے سابق سیکرٹری طارق اعوان کے خلاف نیب کی جانب سے دائر مختلف ریفرنسز کو یکجا کرنے کے احکامات جاری کر دیئے عدالت عالیہ کے فاضل بینچ نے شاہ نواز خان کی وساطت سے دائر پروفیسر طارق اعوان کی رٹ کی سماعت کی دوران سماعت اس کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اس کے موکل کے خلاف اختیارات کے ناجائز استعمال کے حوالے سے مختلف ریفرنسز جمع ہیں پشاورہائیکورٹ نے پہلے اس حوالے سے تمام ریفرنس کو یکجا کرنے کے احکامات جاری کر دیئے جس پر نیب نے عمل درامد کرتے ہوئے ریفرنس یکجا کر دیئے تاہم 2017 میں مختلف سامان سے خریداریوں سے متعلق ایک اور ریفرنس علیحدہ طور پر دائر کیا گیا ہے جو کہ غیر قانونی ہے کیونکہ یہ ایک سپلیمنٹری ریفرنس کے طور پر تو آ سکتا ہے لیکن علیحدہ ریفرنس دائر نہیں ہو سکتا انہوں نے عدالت کو بتایا کہ نیب قانون کے تحت پہلے ہی سے ملزم کو یہ سہولت حاصل ہے کہ نیب کے سیکشن 17ڈی کے تحت تمام ریفرنسز ملزم کے خلاف ایک ساتھ ٹرائل ہونگے مگر نیب نے ایک اور ریفرنس دائر کرکے اس شق کی خلاف ورزی کی ہے دوسری جانب نیب کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ حال ہی میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کے کیس میں اس کے خلاف دائر ریفرنسز پر فیصلے میں کہا ہے کہ تمام ریفرنس الگ الگ دائر ہونگے جس پر شاہ نواز خان ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ نواز شریف تین بار وزیراعظم رہ چکے ہیں اور انکے خلاف اختیارات سے تجاوز سمیت غیرقانونی اثاثے بنانے کا الزام ہیں اس لئے اس کے کیس میں اگر الگ الگ ریفرنس دائر ہوتے ہیں تو یہ صحیح ہوگا لیکن چونکہ درخواست گزار پر صرف اختیارات سے تجاوز کا الزام ہے اس لئے اس کے خلاف تمام ریفرنس یکجا ہونگے عدالت نے دلائل مکمل ہونے کے بعد اس کے خلاف تمام یفرنس یکجا کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے رٹ منظور کر لی 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -